The news is by your side.

Advertisement

منیر اکرم نے جنرل اسمبلی اجلاس میں بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کردیا

نیویارک : پاکستانی سفیر منیر اکرم نے جنرل اسمبلی اجلاس میں ایک مرتبہ پھر بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب کردیا، ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ کی دہشتگردی کی فہرست میں شامل تنظیموں کو بھارتی مالی معاونت کا انکشاف دنیا کی آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہے۔

اقوام متحدہ مین پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے جنرل اسمبلی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ریاستی دہشت گردی کی ہر سطح پر مذمت کرتا ہے، اسی لیے پاکستان نے دنیا سے دہشت گردی کے خاتمے کیلئے انتہائی اہم کردار ادا کیا ہے۔

پاکستان اور عوام گزشتہ کئی دہائیوں سے ریاستی دہشت گردی کا شکار ہیں اور اب تک 80 ہزار سویلین اور سیکیورٹی اہلکاروں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جان کی قربانی دی ہے۔

منیر اکرم نے کہا کہ 2014 میں پاکستان نے فوجی آپریشن سے دہشت گردوں کا صفایا کیا۔

انہوں نے جنرل اسمبلی اجلاس میں خطاب میں ایک مرتبہ پھر بھارت کو آئینہ دکھاتے ہوئے کہا کہ پاکستان کےخلاف دہشتگردی بھارت، افغانستان کی سرزمین سے ہوئی، جس میں بھارت نے مالی امداد کی۔

پاکستانی مندوب نے کہا کہ ہندوستان خطے میں چار طرح کی دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہے، دنیا بھارت کی پاکستان کے خلاف دہشت گردی کی کارروائیوں کو روکنے کےلیے مؤثر کردار ادا کرے۔

منیر اکرم نے جنرل اسمبلی کو بتایا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی ظلم کے نتیجے میں اب تک 96 ہزار افراد شہید ہوچکے ہیں جب کہ بھارت ریاستی دہشت گردی میں 5 اگست 2019 کے بعد مزید شدت آچکی ہے۔

انہوں کہاکہ بھارت نے یو این کی دہشت گردی لسٹ میں شامل تنطیموں کو مالی معاونت فراہم کی اور ان دہشت گردوں نے پی ایس ایکس اور غیرملکیوں کو نشانہ بنایا۔

منیر اکرم کا کہنا تھا کہ اجیت دوول نے پاکستان مخالف تنظیموں کی مدد کا اعتراف کیا، اس سے متعلق پاکستان نے اس حوالے سے جامع ڈوزیئر یو این کو فراہم کردیا ہے۔

پاکستانی مندوب کا کہنا تھا کہ بی جے پی اور آر ایس ایس حکومت بھارتی مسلمانوں کو نشانہ بنارہی ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ ماضی میں خود بھارت نے آر ایس ایس پر پابندی لگائی تھی اسی لیے اقوام عالم کو ایک بار پھر اس دہشت گرد تنظیم پر پابندی لگانا ہوگی۔

منیر اکرم نے کہا کہ دنیا کو دہشت گردی سے نمٹنے کےلیے کشمیری اور فلسطینی عوام کو حق خود ارادیت دینا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں