کچرا اٹھانے اور صفائی کے لیے اختیارات کی ضرورت نہیں، مصطفیٰ کمال -
The news is by your side.

Advertisement

کچرا اٹھانے اور صفائی کے لیے اختیارات کی ضرورت نہیں، مصطفیٰ کمال

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ میں ٹیسٹ کا نہیں بلکہ ٹی ٹوئنٹی کا کھلاڑی ہوں، الزامات لگانے والوں کو اللہ نے قائد سے ہی انکاری کردیا، شہر کا کچرا اٹھانے اور نالوں کی صفائی کے لیے کسی اختیار کی ضرورت نہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اورنگی ٹاؤن آمد کےموقع پر کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ میں یہاں پیسہ کمانے نہیں آیا بکہ شہر کی ابتر صورتحال نے واپس آنے پر مجبور کیا، کراچی کے نمائندوں نے عوام کے نام پر پیسے بنائے اور شہر کے نظام کو برہم برہم کردیا یہی وجہ ہے کہ آج سارا شہر کچرا کنڈی بند گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم پر الزمات لگانے والوں کو اللہ نے 22 اگست کے بعد قائد سے ہی انکاری کردیا، لندن قیادت اپنے نمائندوں سے استعفے مانگ رہی ہے مگر وہی لوگ جو ہم پر الزامات لگاتے تھے عوام کا سہارا لے کر اُن کے پیچھے چھپنے کی کوشش کررہی ہے۔

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ جب تک منتخب نمائندے کچرے میں اپنا مال ڈھونڈیں گے تب تک کراچی کچرے کا ڈھیر رہے گا، پاکستان کا کونسا قانون ہے جو صحت اور صفائی کا کام کرنے سے روکتا ہے جبکہ اس کام کے لیے کسی قسم کے اختیار کی ضرورت نہیں ہے۔

مصطفیٰ کمال نے عوام سے اپیل کی کہ وہ 29 جنوری کو پاک سرزمین کے تحت ایم اے جناح روڈ پر ہونے والے جلسے میں شرکت کریں اور آئندہ نسلوں کا مستقبل محفوظ بنائیں۔

انہوں نے کہا کہ 2018 سے قبل ہمیں اپنی نسلوں کو تباہ ہونے سے بچانا ہے، پی ایس پی کے رہنماء نے عندیہ دیا کہ وہ 29 جنوری کو آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان بھی کریں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں