The news is by your side.

Advertisement

بغاوت کا الزام : اقوام متحدہ میں میانمار کا سفیر عہدے سے برطرف

نیو یارک : فوجی حکومت کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کرنے پر میانمار کی فوجی حکومت نے اقوام متحدہ میں تعینات اپنے سفیر کو بغاوت کے الزام میں برطرف کر دیا۔

اس حوالے سے  برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ میانمار کے اقوام متحدہ میں تعینات سفیر نے اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا تھا کہ میانمار کی فوج کے خلاف کارروائی کی جائے۔

ان کے اس بیان کی وجہ سے میانمار کی فوجی حکومت نے ان پر حکومت کے خلاف بغاوت کا الزام عائد کرکے عہدے سے برطرف کردیا۔

خیال رہے کہ میانمار کی فوج نے آنگ سان سوچی کو گرفتار کر کے جمہوری حکومت کا تختہ اُلٹا دیا تھا اور خود حکومت پر قبضہ جما لیا تھا۔

میانمار پر فوجی حکومت کے قبضے پر دنیا بھر سے جمہوری حکومتوں نے میانمار کی فوج کو تنقید کا نشانہ بنایا اور آنگ سان سوچی کو رہا کر کے جمہوری حکومت بحال کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

امریکا سمیت متعدد مغربی طاقتوں کے مطالبات اور پابندیوں کی وجہ سے میانمار کی فوجی حکومت کو اس وقت شدید دباؤ کا سامنا ہے۔

ملک بھر میں حکومت کیخلاف احتجاجی مظاہرے بھی جاری ہیں اور مظاہرین کے خلاف سخت کارروائی کرنے سے بھی گریز نہیں کیا جارہا۔

خیال رہے کہ رواں ماہ کی یکم تاریخ کو میانمار کی فوج نے ملک کا کنٹرول سنبھالنے کا اعلان کیا تھا۔ فوج نے برسراقتدار جماعت ’نیشنل لیگ آف ڈیموکریسی‘ کی رہنما آنگ سانگ سوچی اور دیگر سیاسی رہنماؤں کو بھی گرفتار کرلیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں