The news is by your side.

Advertisement

تحقیقات میں سست روی : سپریم کورٹ نیب حکام پر برہم

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے جیٹ فیول کی فروخت میں دو ارب سینتیس کروڑ کی کرپشن کے مقدمے کی تحقیقات میں سست روی پر نیب حکام کی کلاس لے لی، جسٹس گلزار نے کہا کہ نیب اپنا تماشا تو بناتا ہی ہے ملک کا بھی تماشا بنا رکھا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جیٹ فیول کی فروخت میں دو ارب سینتیس کروڑ کے فراڈ کیس میں ملزم ذیشان کریمی اور یاسرالحق کی پاسپورٹ واپسی کی درخواست کی سماعت کے موقع پر جسٹس گلزار نے پراسیکیوٹر نیب اور تفتیشی افسر کو جھاڑ پلادی۔

جسٹس گلزار نے کہا کہ ایک سال ہوگیا نیب سے کیس کی انکوائری مکمل نہیں ہورہی، چودہ روز میں انکوائری اور ایک ماہ میں کیس کی پابندی ہے۔

فاضل جسٹس نے  تفتیشی افسرپر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آخر معاملہ کیا ہے؟ کیا پیسے کھارہے ہو؟ تفتیشی افسر نے کہا کہ نہیں میں اپنا کام ایمانداری سے کررہا ہوں، جس پر عدالت نے کہا کہ آپ کی ایمانداری ہم نےجانچ لی ہے، آپ کو ابھی اندر کردیں گے نیب نے ملک کو تباہ کردیا۔

عدالت نے کہا کہ نیب اپنا تماشا توبناتا ہی ہے ملک کابھی تماشا بنارکھاہے، کان کھول کرسنیں نیب حکام کوسونےکی اجازت نہیں، سوئے بغیرکام کرسکتے ہیں تو کریں ورنہ گھرجائیں۔

انہوں نے کہا کہ نیب سے ملک کو سوائے رسوائی کے کچھ نہیں مل رہا، نیب ملک کی جڑیں کھوکھلی کررہاہے۔

نیب کے مطابق ملزم نے کمپنی سے تیرہ لاکھ لیٹرجیٹ فیول خریدا اورسرکاری اداروں کے بجائے دوسروں کو فروخت کردیا، عدالت نےکیس کی تفصیلی رپورٹ کل تک طلب کرلی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں