The news is by your side.

Advertisement

شرجیل میمن کی مشکلات میں اضافہ، نیب نے تفتیش کی منظوری دے دی

کراچی: چیئرمین نیب نے پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما، شرجیل میمن کے خلاف تفتیش کی منظوری دے دی۔

تفصیلات کے مطابق کچھ عرصے تنازعات سے دور رہنے والے سابق صوبائی وزیر شرجیل میمن ایک بار پھر تفتیش کی زد پر ہیں۔

ترجمان نیب کے مطابق شرجیل میمن سے آمدن سے زائد اثاثوں، منی لانڈرنگ پرتفتیش کی جائے گی، اِس سے پہلے شرجیل میمن کے خلاف صرف انکوائری چل رہی تھی۔

ترجمان نیب کا کہنا ہے کہ چیئرمین نیب کی اجازت کے بعد باقاعدہ تفتیش کا آغازکر دیا ہے، شرجیل میمن نے اختیارات کا ناجائز  فائدہ اٹھا کر اربوں کی کرپشن کی اور دوران تعیناتی عہدے کاغلط استعمال کیا، کرپشن کے مرتکب ہوئے۔

نیب کا کہنا ہے کہ سابق وزیر نے بدعنوانی کے ذریعے کئی بے نامی جائیدادیں بنائیں، شرجیل میمن نے بے نامی جائیدادیں خاندان، ملازمین کے نام پربنائیں

مزید پڑھیں: شرجیل میمن زرِ ضمانت جمع کرانے کے بعد سینٹرل جیل سے رہا

نیب کراچی نے شرجیل میمن کی تمام جائیدادوں کی تفصیل جاری کردی، ان کی والدہ کے نام پر270 ایکڑ کی زرعی زمین ہے، انھوں نے منی لانڈرنگ سے بیرون ملک 1 ارب 8 کروڑ سے زائد رقم بھیجی، حیدرآباد راول فارم ہاؤس کی مالیت1 ارب روپے ہے، حیدرآباد میں 10کروڑ سے زائد مالیت کی کاٹن فیکٹری بنائی گئی۔

ترجمان نیب نے کہا ہے کہ شرجیل میمن نے والدہ کےنام 21 کروڑمالیت کے 3 پلاٹس خریدے، شرجیل میمن اوران کی اہلیہ کےنام پرکئی فلیٹس اور ولازہیں، انھوں نے سائٹ ایریا میں ملازمین کےنام پر6 پلاٹ خریدے، پلاٹ پرسنل سیکریٹری اظہارحسین ڈرائیور سبحان کے نام خریدے گئے۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں