The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف نے مریم کے ساتھ مل کر کتنے ملین کی منی لانڈرنگ کی؟

لاہور : چوہدری شوگرملز کیس میں نیب کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ نواز شریف نے یوسف عباس، مریم کے ساتھ مل کر 410 ملین کی منی لانڈرنگ کی، ایک کروڑ 55 لاکھ 20 ہزار ڈالر کا قرض شوگرملز میں ظاہر کیا، یہ قرضہ1992میں آف شورکمپنی سے لیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق چوہدری شوگرملز کیس سے متعلق نیب کی رپورٹ منظر عام پر آگئی ، جس میں بتایا گیا کہ نواز شریف نے یوسف عباس اور مریم نواز کی شراکت داری سے410 ملین کی منی لانڈرنگ کی۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ملزمان نےجعلی 11ملین کے شیئرز غیر ملکی نصیر عبد اللہ کو منتقل کرنے کا دعویٰ کیا ، غیر ملکی کو ٹرانسفر کئے شیئرز در حقیقت  نوازشریف کو 2014 میں واپس کئے گئے تھے۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا چوہدری و شمیم شوگر ملز میں 1992 سے 2016 تک 2ہزار ملین کی انویسٹمنٹ کی گئی ، نواز شریف نے ایک کروڑ 55 لاکھ 20 ہزار ڈالر  کا قرض شوگر ملز میں ظاہر کیا، یہ قرضہ1992 میں آف شور کمپنی سے لیا تھا۔

نیب رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف نے جس کمپنی سے قرض لیا اس کا اصل مالک ظاہر نہیں کیا گیا، چوہدری شوگر ملز کے آغاز کے لئے شریف فیملی نے  اپنی 9کمپنیوں سےقرض لیا، شریف فیملی نے20 کروڑ 95 لاکھ کا قرض 9 کمپنیوں سے لیا۔

رپورٹ کے مطابق چوہدری شوگرملز کے لئے ایک کروڑ 53لاکھ ڈالر کا قرض بھی حاصل کیا گیا ، نواز شریف 1992میں 43 ملین شیئر کے مالک تھے، ان کے پاس اتنے شیئر 1992 میں کہاں سے آئے یہ نہیں بتایا گیا۔

مزید پڑھیں : چوہدری شوگرملز کیس : نواز شریف 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

رپورٹ میں مزید کہا گیا نوازشریف کےجب اثاثےبڑھےاس وقت پنجاب کےوزیراعلیٰ،وزیرخزانہ بھی رہے تاہم نوازشریف نےنیب مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کوکسی سوال کاجواب نہیں دیا۔

یاد رہے آج صبح قومی احتساب بیورو نیب نے چوہدری شوگر ملز کیس میں نواز شریف کو گرفتار کرکے احتساب عدالت میں پیش کیا ، جہاں عدالت نے کو 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا اور 25 اکتوبرکو پیش کرنے کی ہدایت کی۔

خیال رہے چوہدری شوگر ملز کیس میں نیب نے مریم نواز اور یوسف عباس کو بھی گرفتار کر رکھا ہے جو جسمانی ریمانڈ کے بعد اس وقت جوڈیشل ریمانڈ پر جیل میں ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں