site
stats
پاکستان

نوازشریف کے خلاف ایل ڈی اے کے غیرقانونی پلاٹوں کی الاٹمنٹ کی تحقیقات شروع

اسلام آباد : نااہل ہونے کے بعد سابق وزیراعظم نوازشریف کی مشکلات میں اضافہ ہوتا جارہا ہے ، بطور وزیراعلیٰ لاہورڈیولپمنٹ اتھارٹی کے پلاٹ غیر قانونی طور پر الاٹ کئے تھے، اب نیب اس حوالے سے بھی حرکت میں آگئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ابھی پاناما کا ہنگامہ تھما بھی نہ تھا کہ نیب نے نوازشریف کیخلاف ایک اور انکوائری کا آغاز کردیا، نیب نےایل ڈی اےکےغیرقانونی پلاٹوں کی الاٹمنٹ کی تحقیقات شروع کردیں ۔

نیب نے سابق بیوروکریٹس سمیت دیگرتیرہ افراد کو طلب کرلیا، نوازشریف نے بحیثیت وزیراعلیٰ پنجاب ان تیرہ افراد کو غیر قانونی پلاٹ الاٹ کئے تھے۔

نیب نے تحقیقات کیلئے لاہور پولیس سےمدد طلب کی ہے جبکہ لاہور پولیس کو سمن کی تکمیل کیلئے ہدایات جاری کی ہیں،  ہدایت میں کہا گیا ہے کہ لاہور پولیس ایس ایچ اوز کی مدد سے سمن کی تکمیل کرائیں، پولیس کو انتیس ستمبرتک سمن کی تکمیل کرانےکی ہدایت کی ہے۔


نوازشریف پرفرد جرم 2 اکتوبرکوعائد کی جائے گی


واضح رہے گزشتہ روزسابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف پر فرد جرم عائد کرنے کے لیےاحتساب عدالت نے 2 اکتوبر کی تاریخ دی تھی جبکہ حسن، حسین اور مریم نواز کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں گرفتار کرکے 2 اکتوبرکو پیش کیا جائے۔

جس کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف نے  صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عدلیہ پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ 2018 میں بڑا فیصلہ آئے جو مولوی تمیز الدین سمیت تمام فیصلوں کو بہا کرلےجائے گا۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کھلی آنکھوں سے دیکھ رہے ہیں انصاف اور قانون کے تقاضے پامال ہورہےہیں،آخرمیں فیصلہ یہ آیا ہے کہ ایک روپےکی بھی کرپشن ثابت نہیں ہوئی۔ مجھےنااہل کرناہی تھااسی لیےاقامہ کی آڑلی گئی۔یہ اعتراف ہی کرلیاجاتاکہ پانامامیں سزانہیں دی جاسکتی اسی لیےاقامہ پرنااہل کیاگیا۔ پانامامیں سزانہیں دی جاسکتی تھی اسی لیےاقامہ پرنااہل کردیا گیا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top