ایشین گیمز 2018: ندیم ارشد نے ملک کے لیے کانسی کا تمغا جیت لیا -
The news is by your side.

Advertisement

ایشین گیمز 2018: ندیم ارشد نے ملک کے لیے کانسی کا تمغا جیت لیا

جکارتہ: پاکستان نے ایشین گیمز 2018 میں ایک اور کانسی کا تمغا جیت لیا، اس بار خانیوال سے تعلق رکھنے والے ندیم ارشد نے نیزہ پھینکنے کے مقابلے میں تمغا اپنے نام کیا۔

تفصیلات کے مطابق آج نیزہ بازی کے مقابلوں میں پاکستان کے اکیس سالہ ایتھلیٹ ندیم ارشد نے نیزہ پھینک کر پاکستان کے لیے کانسی کا میڈل حاصل کر لیا۔

ندیم ارشد نے نیزہ پھینکنے کے ٹورنامنٹ کے فائنل میچ میں کانسی کا تمغا جیتا، انھوں نے یہ اعزاز 80.75 میٹر دور نیزہ پھینک کر حاصل کیا، اس سے دوران انھوں نے چھ بار کوشش کی اور نیزہ بالترتیب 73.52، 76.73، 72.20، 80.75، 77.56، 72.20 میٹر دور پھینکا۔

ایشین گیمز 2018 میں پاکستان کے لیے یہ ایک اور تمغا ہے، پاکستان کے تمغوں کی تعداد تین ہوگئی ہے، اس سے قبل پاکستان نے کراٹے اور کبڈی میں بھی ایک ایک کانسی کا تمغا جیتا ہے۔

کراٹے کے مقابلوں میں 19 سالہ لڑکی نرگس نے پاکستان کے لیے پہلا میڈل جیتا، ایتھلیٹ نرگس کا تعلق کوئٹہ کی ہزارہ برادری سے ہے، انھوں نے نیپال کی ایتھلیٹ ریٹا کرکی کو 68 کلو گرام کے میچ میں تین ایک سے ہرا کر آؤٹ کلاس کر دیا تھا۔


یہ بھی پڑھیں:  ایشین گیمز: پاکستان نے کراٹے کے مقابلوں‌ میں‌ کانسی کا تمغہ اپنے نام کر لیا


خیال رہے کہ نرگس گزشتہ برس بھی کولمبو میں ہونے والے ساؤتھ ایشین کراٹے چیمپیئن شپ میں طلائی تمغا جیت چکی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں