The news is by your side.

Advertisement

نادرا نے شہریوں کی سہولت کے لیے اہم قدم اٹھا لیا

اسلام آباد: نادرا نے شہریوں کے لیے سینٹرلائزڈ کمپلینٹ منیجمنٹ سسٹم کا آغاز کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق نادرا نے شہریوں کی سہولت کے لیے اہم قدم اٹھا لیا ہے، اب شہری سہولت کے ساتھ شکایت درج کر سکیں گے، نادرا نے شکایات کے ازالے کے عمل کو باسہولت اور مزید مؤثر بنانے کے لیے نئے ڈیزائن شدہ نادرا سینٹرلائزڈ کمپلینٹ مینجمنٹ سسٹم کا افتتاح کر دیا۔

نادرا کی جانب سے عوام کو وسیع پیمانے پر خدمات کی فراہمی اور اس سے متعلق شکایات کا اندراج مختلف پلیٹ فارمز پر کیا جا رہا تھا، جن میں ہیلپ لائن، ٹویٹر، فیس بک، پاکستان سٹیزن پورٹل، تحریری درخواستیں/شکایات، شکایات کا پرانا نظام، کمپلینٹ مینجمنٹ سسٹم اور عوام کے بذات خود نادرا دفاتر اور ہیڈ کوارٹر میں آنا شامل تھا۔

مختلف پلیٹ فارمز ہونے کی وجہ سے نادرا انتظامیہ کے لیے ان کو حل کرنے میں بہت سے مسائل پیدا ہو رہے تھے، شکایات کے ازالے کے لیے منتشر نظام، شکایات کے حل میں تاخیر اور غیر مؤثر نتائج کا بھی سبب بنا۔

نیا نادرا سینٹرلائزڈ کمپلینٹ منیجمنٹ سسٹم خدمات کی فراہمی کو بہتر بنانے اور پہلے سے موجود شکایات کے ازالے کا دائرہ کار، جس میں شکایات پر نظر رکھنے، ان کی درجہ بندی کرنے، نگرانی کرنے اور جواب دینے کے لیے مناسب طریقہ کار کا فقدان تھا، کو وسعت بخشنے اور اسے جدید خطوط پر استوار کرنے کی جانب ایک بہت بڑا قدم ہے۔

نیا نظام ملک بھر اور بیرون ملک نادرا کی خدمات حاصل کرنے والے عام لوگوں کے مسائل اور شکایات کا فوری اور مؤثر جواب دینے کے عمل کو یقینی بنائے گا، اسے کمپلینٹ مینجمنٹ پورٹل نادرا کی ویب سائٹ پر لائیو کر دیا گیا ہے جہاں شہری نادرا سے متعلق کسی بھی مسئلے کے حوالے سے اپنی شکایات براہ راست درج کر سکتے ہیں۔

چیئرمین نادرا طارق ملک نے اس سسٹم کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے نادرا کی خدمات اور ملازمین کی کارکردگی کو عوام کے لیے کھول دیا ہے تاکہ وہ خود اس کو پرکھیں اور اپنی رائے دے سکیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ نادرا کو عوام کی آنکھ سے دیکھ کر ہی انھوں نے ایک واحد مرکزی نظام تیار کیا ہے۔

چیئرمین نادرا طارق ملک نے کہا، نادرا قومی سطح پر عوامی مسائل کی شنوائی کرنے والا سب سے بڑا ادارہ ہے، جو اپنے 755 رجسٹریشن مراکز، 263 موبائل رجسٹریشن وینز اور 10 سمندر پار مراکز میں روزانہ اوسطاً ایک لاکھ لوگوں کو اپنی خدمات فراہم کر رہا ہے، نادرا کی آن لائن پاک آئی ڈی سروسز کی دستیابی بھی عالمی سطح پر 190 سے زائد ممالک میں ممکن بنائی گئی ہیں۔

نئے نظام کے تحت اگر کسی شکایت کو مقررہ وقت کے اندر اندر حل نہیں کیا جاتا تو ایسی شکایت کو ترجیحاً اعلیٰ سطح پر پہچانے کا فیچر بھی متعارف کرایا گیا ہے جس کی بدولت شکایت براہ راست چیئرمین نادرا تک پہنچے گی۔

شہری ذیل میں سے کسی بھی ذریعے کو استعمال کر کے شکایات درج کر سکتا ہے، مثلاً موبائل فون صارفین کے لیے نادرا ہیلپ لائن 1777، لینڈ لائن صارفین اور بین الاقوامی کال کرنے والوں کے لیے 051111786100، ای میل، سوشل میڈیا، کسٹمر سروس ڈیپارٹمنٹ اور زونل ڈائریکٹر جنرلز کو ٹویٹر اور فیس بک پر موصول ہونے والی شکایات۔

اس کے بعد شکایات کو مرکزی نگرانی، کارروائی اور حل کے لیے نادرا سینٹرلائزڈ کمپلینٹ منیجمنٹ سسٹم میں لاگ ان کر دیا جائے گا اور شہری کو ٹریکنگ نمبر مہیا کر دیا جائے گا۔

سسٹم کو تمام مطلوبہ خصوصیات سے لیس کیا گیا ہے جیسے منفرد رجسٹریشن نمبر کے ذریعے اسٹیٹس ٹریکنگ، درجہ بندی اور تکمیل کی رسید وغیرہ تاکہ شکایت درج ہونے کے تجربے کو صارف دوست بنایا جا سکے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں