The news is by your side.

Advertisement

اولمپکس میں نجمہ پروین کی شکست، ایتھلیٹکس فیڈریشن کا خط سامنے آگیا

ٹوکیو اولمپکس میں ناقص کارکردگی دکھانے والی پاکستانی ایتھلیٹ نجمہ پروین کے معاملے پر ایتھلیٹکس فیڈریشن آف پاکستان کا خط سامنے آگیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق ٹوکیو اولمپکس میں پاکستان کے مزید دو کھلاڑی باہر ہوگئے، 200 میٹر ریس میں نجمہ پروین آخری نمبر پر آئیں۔

ذرائع کے مطابق اسپورٹس بورڈ نے نجمہ پروین کو بھیجنے سے منع کیا تھا، وہ شادی کے بعد سے ٹریننگ نہیں کررہی تھیں، اسپورٹس بورڈ ان کی فٹنس سے بھی بے خبر تھا، ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک آفیشل کا ٹور یقینی بنانے کے لیے نجمہ پروین کو بھیجا گیا۔

پانچ جولائی کو ایتھلیٹکس فیڈریشن کا پاکستان اسپورٹس بورڈ کو لکھا گیا خط سامنے آگیا، خط میں کہا گیا تھا کہ ایک خاتون آفیشل کو نوازنے کے لیے نجمہ کو اولمپکس میں بھیجنا مناسب نہیں۔

خط کے مطابق فیڈریشن کی درخواست پر پاکستان اسپورٹس بورڈ نے لاہور میں ٹریننگ کیمپ کا اہتمام کیا لیکن خاتون ایتھلیٹ کیمپ میں متعدد بار رابطےکے باوجود نہ آئیں جس پر فیڈریشن کی درخواست پر اسپورٹس بورڈ نے واپڈا سے رابطہ کیا کیونکہ نجمہ پروین کا تعلق واپڈا سے ہے۔

واپڈا نے اسپورٹس بورڈ کو بتایا کہ نجمہ پروین فیصل آباد میں ڈیپارٹمنٹ کے کوچ کی نگرانی میں ٹریننگ کر رہی ہے،فیڈریشن کو کوچ کا علم نہیں تھا،اور نہ ہی ٹریننگ کو مانیٹر کیا جا سکتا تھا۔

خط کے مطابق پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن نے فیڈریشن کے کوالیفائیڈ کوچ کو تبدیل کر کے واپڈا کےکوچ کو ذمہ داریاں دے دیں جو کہ فیڈریشن کے آئین کی خلاف ورزی تھی۔

واضح رہے کہ نجمہ پروین 2016 اولمپکس میں بھی آخری نمبر پر رہی تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں