نقیب اللہ قتل کیس: راؤانوارانسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں پیش -
The news is by your side.

Advertisement

نقیب اللہ قتل کیس: راؤانوارانسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں پیش

کراچی: انسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی، سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار سمیت دیگر ملزمان عدالت میں پیش ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق آج ملزمان کی پیشی کے موقع پر کیس کے تفتیشی افسر ڈاکٹر رضوان بھی عدالت میں پیش ہوئے اور کیس میں نامزد مفرور ملزمان سے متعلق رپورٹ پیش کی۔

رپورٹ کے مطابق مفرور ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں اور انہیں جلد حراست میں لے لیا جائے گا۔عدالت نےکیس کی مزیدسماعت31اکتوبرتک ملتوی کردی۔

کیس میں نامزد ملزم اور سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تفتیشی افسر کی جانب سے پیش کی جانے والی رپورٹ جھوٹی ہے۔انہوں نے کہا کہ میں اپنی رہائش گاہ پر موجود ہوں ، جب بھی عدالت بلاتی ہے پیش ہوتا ہوں، تفتیشی افسر کی جانب سے غلط بیانی کی جارہی ہے۔

نیب کی جانب سے ان کے اثاثوں کی چھان بین سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے نیب کی انکوائری سے لاعلمی کا اظہار کیا اور کہا کہ ایسا کچھ میرے علم میں نہیں ہے۔

یاد رہے کہ 13 جنوری کو ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کی سربراہی میں پولیس ٹیم نے شاہ لطیف ٹاؤن میں پولیس مقابلہ کا دعویٰ‌کیا تھا۔ ٹیم کا موقف تھا کہ خطرناک دہشت گردوں کی گرفتاری کے لیے اس کارروائی میں‌ پولیس نے جوابی فائرنگ کرتے ہوئے چار ملزمان کو ہلاک کیا ہے، ہلاک ہونے والوں میں نوجوان نقیب اللہ بھی شامل تھا۔

سوشل میڈیا پر چلنے والی مہم کے بعد اس واقعے کے خلاف عوامی تحریک شروع ہوئی، جس کے نتیجے میں‌ پولیس مقابلے کی تحقیقات شروع ہوئیں اور ایس ایس پی راؤ انوار کو عہدے سے معطل کرکے مقابلہ کو جعلی قرار دے گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں