The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف کی حکومت مخالف تحریک کا حصہ بننے سے معذرت

لاہور: مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی.

پارٹی ذرائع کے مطابق نوازشریف نے کسی بھی حکومت مخالف تحریک کاحصہ بننے سے معذرت کر لی.

پارٹی سے مشاورت کے لئے کچھ وقت درکار ہے، صحت ٹھیک نہیں

میاں نواز شریف

نوازشریف نے مؤقف اختیار ہے کہ انھیں‌ پارٹی سے مشاورت کے لئے کچھ وقت درکار ہے، صحت ٹھیک نہیں، وہ پہلے پارٹی کو اعتماد میں لینا چاہییں گے.

پارٹی ذرائع کے مطابق اس موقع پر  مسلم لیگ ن کے قائد میاں‌ نواز شریف نے شکوہ بھی کیا کہ جب میں جیل میں تھا، تو مولانا صاحب ملنے نہیں آئے.

اس کے جواب میں‌ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ آپ سے ملنا چاہتا تھا، مگر اجازت نہیں ملی.

اس کے جواب میں‌ نواز شریف نے کہا کہ مولانا صاحب جیل میں سب ملنے آتے رہے. انھوں نے مسکراتے ہوئے پوچھا کہ مولانا صاحب، آپ کس سےاجازت مانگ رہے تھے؟

مزید پڑھیں: عمران خان اپنے خاتمے کا سوچیں ہماری فکرنہ کریں، مولانافضل الرحمان

اس موقع پر مولانا فضل الرحمان نے تجویز دی کہ اس وقت ن لیگ، پی پی کا ساتھ چلنا ضروری ہے.

جواب میں میاں‌نواز شریف نے کہا کہ وقت آنے پر ساتھ چلیں گے، بلاول بھٹو کی مثبت سوچ سے متاثر ہوں، انھوں نے جیل میں ملاقات کرکے حوصلہ بڑھایا، مہنگائی کا طوفان برپا ہے، عام آدمی شدید مشکلات کاشکار ہے.

خیال رہے کہ آج میاں نواز شریف اور مولانا فضل الرحمان کی ملاقات ہوئی تھی، جس کے بعد مولانا فضل الرحمان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان اور حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں