The news is by your side.

Advertisement

آئی ایم ایف سے مذاکرات، حکومت کا بجٹ اجلاس تاخیر سے بلانے کا فیصلہ

آئی ایم ایف سے مذاکرات کے باعث حکومت نے قومی اسمبلی کا بجٹ اجلاس تاخیر سے بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کو ذرائع نے بتایا ہے کہ آئی ایم ایف سے ہونے والے مذاکرات کے باعث وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال کے بجٹ کیلیے قومی اسمبلی کا اجلاس تاخیر سے بلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومتی ذرائع نے اس حوالے سے بتایا ہے کہ قومی اسمبلی کا بجٹ اجلاس 6 جون کو شروع کرنے کی تجویز ہے تاہم نئے مالی سال برائے 2022-23 کا بجٹ 10 جون کو پیش کرنے پر غور کیا جارہا ہے۔

پاکستان اور آئی ایم ایف میں 7 ویں اقتصادی جائزہ مذاکرات 18 مئی سے شروع ہونگے۔ ذرائع نے بتایا کہ مذاکرات کی کامیابی کی صورت میں پاکستان کو 96 کروڑ ڈالر کی اگلی قسط ملے گی تاہم اس کے لیے حکومت کو آئی ایم ایف کی شرط قبول کرتے ہوئے پٹرول، ڈیزل اور بجلی پر سبسڈی میں بتدریج کمی لانا ہوگی۔

مزید پڑھیں: آئی ایم ایف کی قسط کیلئے پیشگی شرائط ، شوکت ترین نے خبردار کردیا

واضح رہے کہ سابق وزیر خزانہ شوکت ترین نے پہلے ہی آگاہ کردیا تھا کہ آئی ایم ایف 7 ویں اور 8 ویں قسط کو پیشگی شرائط سے منسلک کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں