site
stats
خواتین

انسانی حقوق ٹیولپ ایوارڈ 2016 پاکستانی سماجی کارکن نگہت داد کے نام

اسلام آباد: پاکستان کی ڈیجیٹل حقوق فاؤنڈیشن کی بانی نگہت داد کو ہالینڈ حکومت کی جانب سے انسانی حقوق کے ٹیولپ ایوارڈ 2016 سے نوازا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق انسانی حقوق ٹیولپ ایوارڈ وزیر خارجہ کی جانب سے انسانی حقوق کا دفاع کرنے والوں کیلئے ایک سالانہ ایوارڈ ہے، ہالینڈ حکومت کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ نگہت داد کو یہ ایوارڈ ہالینڈ کے وزیرخارجہ بریٹ کونڈرز انسانی حقوق کے عالمی دن کے موقع پر10دسمبر کو دی ہیگ میں دیں گے۔

وزیرخارجہ کا کہنا ہے کہ انسانی حقوق کا دفاع کرنے والے جدید دور کے ہیرو ہے، بہت سے خطرات کے باوجود نگہت داد کی ایک منفرد اور جدید انداز میں پاکستان میں انسانی حقوق کے عمل کو بہتر بنانے کے لئے کوششیں جاری ہے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ اظہار رائے کی آزادی پاکستان میں دباؤ کا شکار ہے اور بڑھتی ہوئی پابندیوں نے یکساں افراد اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کی ڈیجیٹل آزادیوں کو متاثر کیا ہے، نگہت داد ڈیجیٹل حقوق کی ایک کٹر محافظ ہے۔

بریٹ کونڈرز نے امید ظاہر کی کہ یہ ایوارڈ انٹرنیٹ صارفین، خاص طور پر خواتین کی آزادی کے لئے حمایت کے طور پر کام کرے گا۔

ٹیولپ ایوارڈ کانسی کے مجسمے اور ایک لاکھ یورو کی انعامی رقم شامل ہے۔ نگہت داد پاکستان میں لوگوں خاص طور پرخواتین کی انٹرنیٹ تک رسائی میں مشکلات دورکرنے کی کوشش کررہی ہیں۔

نگہت داد وکیل ہیں، جنہوں نے 2012ء میں ڈیجیٹل رائٹس فاؤنڈیشن قائم کی تھی، جس کے بعد سے وہ اب تک ہزاروں پاکستانیوں کو آن لائن ہراساں ہونے سے بچنے اور خود کی حفاظت کی تعلیم دے چکی ہیں۔

نگہت کے ڈیجیٹل رائٹس فاؤنڈیشن نے ٹیلی کام کمپنیوں کی جانب سے غیر ملکی اور ریاستی انٹیلی جنس اداروں کے لیے صارفین کی ذاتی معلومات کے حصول کے خلاف بھی آواز بلند کی ہے۔

نگہت داد کو گزشتہ ماہ ٹاپ 10 میں شامل کیا گیا تھا ، جس کے بعد انھیں آخری تین امیدواروں میں چنا گیا۔


مزید پڑھیں : پاکستانی خاتون نگہت داد نیکسٹ جنریشن لیڈرز کی فہرست میں شامل


یاد رہے کہ ڈیجیٹل حقوق کے تحفظ کے لئے سرگرم پاکستانی خاتون نگہت داد کو نیکسٹ جنریشن لیڈرز کی فہرست میں شامل کیا گیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top