The news is by your side.

Advertisement

مطالبات نہ مانے توکل سےشہریوں کے ساتھ دھرنا دوں گا، والد نشوہ

کراچی : نشوہ کے والد قیصر علی نے مطالبہ کیا ہے کہ دارالصحت اسپتال کی انتظامیہ کوگرفتار کرکےنشوہ کیس کی جوڈیشل انکوائری کرائی جائے، مطالبات منظورنہ ہوئےتوکل شہریوں کولےکردھرنے پربیٹھ جاؤں گا۔

تفصیلات کے مطابق نشوہ کے والد قیصر علی اے آر وائی کے پروگرام باخبرسویرامیں گفتگوکرتے ہوئے کہا ہمارامطالبہ ہےدوران تفتیش دارلصحت اسپتال بندکر دیا جائے، تفتیش کے بعد طے کیا جائے کہ اسپتال کوکتنی مدت کا لائسنس دیا جائے۔

والدنشوہ کا کہنا تھا اسپتال بند کریں تاکہ انتظامیہ کوایک پیغام کی جائے، بغیر لائسنس کے کوئی اسپتال کیسے چلایاجاسکتاہے، لائسنس کے بغیر اسلحہ نہیں رکھا جاسکتا تو اسپتال کیسے چلایا جاسکتاہے۔

قیصر علی نے کہا ہم پر ہر روز کا ایک دباؤ ہے، 16دن نشوہ کے زیر علاج رہنے سے زیادہ تکلیف اس بیمار نظام سے ہے، مجھے بڑے بڑے ایوانوں میں بیٹھنے والے افراد سے کوئی امید نہیں ہے۔

معاملےکی عدالتی تحقیقات کی جائے، انتظامیہ کوگرفتارکیاجائےاورتفتیش تک اسپتال بندکیاجائے

ان کا کہنا تھا دارالصحت اسپتال میں کام کرنے والے ملازمین میرے لیے محترم ہیں، اتنا بیمار نظام ہے کہ مجھے پتہ ہے کہ 3سال سے پہلے کیس کا فیصلہ نہیں آئےگا۔

نشوہ کے والد نے مطالبہ کیا معاملےکی عدالتی تحقیقات کی جائے، انتظامیہ کوگرفتارکیاجائے اور تفتیش تک اسپتال بندکیا جائے، اپنے مطالبات کےلیےکل سے میں شہریوں سمیت بیٹھ جاؤں گا۔

قیصرعلی کا کہنا تھا مجھےاطلاع ہے کہ دارالصحت اسپتال کے عامر چشتی کل بلاول ہاؤس میں تھے، میں اپنےمطالبات کے لیے بیٹھ جاؤں گا کسی کونہیں دیکھوں گا، مطالبات کے آگے نہ سندھ اور نہ وفاقی حکومت کودیکھوں گا۔

مزید پڑھیں :  نشوہ کی موت: وزیر اعلیٰ سندھ نے دارالصحت اسپتال سیل کرنے کا حکم دے دیا

یاد رہے گذشتہ روز وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے دارالصحت اسپتال سیل کرنے کا حکم دیا تھا ۔

واضح رہے نوماہ کی نشوہ کودارالصحت اسپتال میں غلط انجکشن لگایا گیا تھا، طبیعت بگڑنےپرنشوہ کولیاقت نیشنل اسپتال منتقل کیا گیا اور کئی روز زندگی اورموت کی جنگ لڑنے والی نشوہ آج خالق حقیقی سے جاملی ، وہ لیاقت نیشنل اسپتال کے آئی سی یو میں ایک ہفتےتک زیرعلاج رہی۔

اسپتال کے مالک عامر چشتی اور علی فرحان بھی نامزد ملزمان میں شامل ہیں، ان کے علاوہ ایگزیکٹو ڈائریکٹر شہزاد عالم، چیف میڈیکل آفیسر شرجیل، نرسنگ ہیڈ رضوان اعظمی اور ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ احمر عباس، ہیڈ آف ایچ آر عرفان اسلم، ہیڈ آفس اسٹاف، ٹرانسپورٹ ولید کے نام بھی شامل ہیں، جب کہ ثوبیہ اور معیز پہلے سے ہی گرفتار ہیں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں