site
stats
عالمی خبریں

خواجہ سراؤں کے عمرے پر پابندی نہیں لگائی، سعودی حکام

کراچی: سعودی حکومت نے خواجہ سرائوں پر عمرے کی پابندی کی خبر کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ نہ ماضی میں خواجہ سرائوں پر ایسی کوئی پابندی عائد کی گئی اور نہ مستقبل میں ایسا کوئی ارادہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ چند روز قبل سوشل میڈیا اور اخبارات میں یہ خبر نشر ہوئی کہ سعودی حکومت نے خواجہ سرائوں پر عمرہ کرنےکی پابندی عائد کردی ہے اور اس ضمن میں ٹریول ایجنٹس اور ایجنسیز کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں کہ خواجہ سرائوں سے ویزا درخواست نہ لی جائیں اور نہ ان سے سفری معاملات طے کیے جائیں لیکن سعودی حکومت کے ذرائع نے اس خبر کو بے بنیاد قرار دیا ہے۔

یہ پڑھیں : خواجہ سراؤں کے عمرہ کرنے پرپابندی عائد

سعودی حکومت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ خواجہ سرائوں کے عمرے پر کوئی پابندی عائد نہیں کی گئی،ان کے لیے صرف ایک قانون ماضی کا بنا ہوا موجود ہے کہ اگر وہ نازیبا حرکات کرتے ہوئے پائے گئے تو انہیں پکڑ لیا جائے تاہم عمرہ پر پابندی کی خبر میں صداقت نہیں۔

قبل ازیں خواجہ سرائوں پر عمرہ کرنے کی پابندی کی خبر میڈیا میں نشر ہونے پر خواجہ سرائوں نے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے پابندی کو مذہبی اور انسانی حقوق کی شدید ترین پامالی قرار دیا تھا۔

شی میل فائونڈیشن پاکستان کی سربراہ الماس بوبی نے اس خبر کے بعد برطانوی نشریاتی ادارے سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ جن خواجہ سرائوں کے ویزے لگ چکے ہیں وہ مخمصے کا شکار ہیں کہ آیا وہ عمرے پر جائیں کہہ نہیں، قرآن کی کس آیت میں لکھا ہے کہ خواجہ سرائوں کے عمرہ پر جانے پر پابندی ہے۔

خواجہ سرا پر عمرہ کی پابندی ناجائزہے، مفتیان کرام

پابندی کی خبر پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے مذہبی اسکالرمفتی ڈاکٹر راغب حسین نعیمی کی سربراہی میں جامعہ نعیمیہ کے شعبہ دارالافتاء کے مفتیان کرام نے سعودی حکومت کی طرف سے خواجہ سراﺅں کے عمرہ پر حالیہ پابند ی کو مسترد کرتے ہوئے متفقہ شرعی فتویٰ میں کہا تھا کہ خواجہ سراﺅں پر عمرہ کے لیے پابندی لگانا شرعاً ناجائز ہے، حکومت پاکستان سعودی گورنمنٹ سے بات کرکے خواجہ سراﺅں پر پابندی ختم کرائے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top