The news is by your side.

Advertisement

مسئلہ فلسطین کے حل تک اسرائیل سے کوئی رابطہ ممکن نہیں، وزیر خارجہ

ملتان : شاہ محمود قریشی نے اسرائیل سے متعلق کہا کہ مسئلہ فلسطین کے حل تک اسرائیل سے کوئی رابطہ ممکن نہیں، ہم پر اسرائیل تسلیم کرنے کے حوالے سے کوئی دباؤ نہیں۔

ان خیالات کا اظہار وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ملتان میں دربار عالیہ حضرت شاہ رکن الدین عالم سہروردی کے 707 ویں عرس مبارک کے آغاز کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ اسرائیل کے بارے میں ان کا مؤقف سناور سمجھا، لیکن میں اسرائیل سے متعلق پاکستان کا مؤقف واضح کیا۔

شاہ محمود نے کہا کہ مسئلہ فلسطین کےحل تک اسرائیل سےکوئی رابطہ ممکن نہیں، ہم پر اسرائیل کو تسلیم کرنے کے حوالے سے کوئی دباؤ نہیں ہے، اور ہم نےپاکستان کےمفادات کودیکھ کرفیصلےکرنےہیں کسی دباؤ پر نہیں۔

انہوں نے کہا کہ یو اے ای کے متخلف علاقوں میں پاکستانی رہتے ہیں، دبئی کے حکمرانوں سے ملاقاتوں کا موقع ملا اور ویزا کے معاملات سمیت دیگر امور پر بات چیت کی۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ متحدہ عرب امارات میں ویزا کی بندش عارضی ہے جلد ختم ہوجائے گی اور یو اے ای کے پاس پاکستان کو کوئی نعم البدل نہیں ہوسکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یو اے ای اور سعودی عرب بھارت کو پاکستان کا نعم البدل نہیں سمجھتے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت کو جب بھی موقع ملا پاکستان کو زک پہنچانے کی کوشش کی، 14 نومبر کومیں نے اور ڈی جی آئی ایس پی آر نے ایک ڈوزیئر دنیا کے سامنے رکھا کہ بھارت دہشت گردی کو ہوا دے رہا ہے۔

شاہ محمود نے کہا کہ بھارت دہشت گردوں کی معاونت اور پاکستان مخالف سرگرمیوں میں ملوث ہے، ہم نے پی فائیو اور سلامتی کونسل کے غیر مستقل ارکان سے ڈوزیئر شیئر کیا، اور دیگر اہم ممالک اور اقوام متحدہ سے بھی ڈوزیئر شیئر کیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ انڈیا کرانیکلز کے نام سے دستاویز کا ذکر ہورہا ہے، بھارت جعلی این جی اوز اور جعلی ویب سائٹ سے پاکستان کو بدنام کرنےکی کوشش کررہا ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت کا چہرہ بے نقاب ہوگیا ہے اور یہ انکشاف پاکستان نے نہیں بلکہ یورپی یونین نے کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں