site
stats
انٹرٹینمںٹ

ملکہ نورترنم جہاں کو بچھڑے 15برس بیت گئے

ملکہ ترنم نورجہاں کو اپنے مداحوں اورپرستاروں سے بچھڑے پندرہ برس بیت گئے، برصغیر میں فنِ گلوکاری کی تاریخ ان کے ذکر کے بغیر ادھوری ہے۔

ملکہ ترنم نور جہاں 21ستمبر 1926 کو قصور میں پیدا ہوئیں۔ انھوں نے اپنے فنی کیرئیر کا آغاز 1935 میں “پنڈ دی کڑی ” سے کیا۔

نورجہاں نے 1942میں پران کے مدمقابل فلم خاندان میں مرکزی کردار اداکیا۔ بطور مرکزی اداکارہ یہ فلم نورجہاں کی اولین فلم تھی جو کامیابی سے ہمکنار ہوئی۔بعد ازاں نورجہاں نے 1943میں بننے والی فلم دہائی کیلئے گیت گائے ۔ یہ دوسری بارتھا کہ نورجہاں نے اپنی آواز کسی دیگر اداکارہ کیلئے دی۔ دہائی میں حسن بانو نےمرکزی کرداراداکیاتھا۔

1957میں حکومتِ پاکستان نے انھیں شاندار پرفارمنس کے باعث صدارتی ایوارڈ تمغہ امتیاز اوربعدازاں پرائیڈ آف پرفارمنس سے بھی نوازا گیا۔

1965کی جنگ میں نورجہاں کے ملی نغمے قوم اورفوج کے جوش و ولولے میں اضافے کے سبب بنے۔

نورجہاں نے مجموعی طور پردس ہزار سے زائد غزلیں اورگیت گائے جو کہ بذاتِ خود ایک ریکارڈ ہے۔

ملکہ ترنم نورجہاں 23دسمبر2000 کو 74 برس کی عمرمیں اپنے خالق حقیقی سے جاملیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top