The news is by your side.

Advertisement

بائیڈن کے ایشیا سے نکلنے کے چند گھنٹے بعد شمالی کوریا نے 3 میزائل داغ دیے

پیانگیانگ: امریکی صدر جو بائیڈن کے ایشیا سے نکلنے کے چند گھنٹے بعد ہی شمالی کوریا نے 3 میزائل داغ دیے۔

تفصیلات کے مطابق جنوبی کوریا کی فوج نے کہا ہے کہ شمالی کوریا نے بدھ کی صبح تین بیلسٹک میزائل فائر کیے ہیں۔

سیئول میں حکام نے بتایا کہ میزائل پیانگ یانگ کے علاقے سنان سے ایک گھنٹے سے بھی کم وقفے میں فائر کیے گئے، یہ تجربات امریکی صدر جو بائیڈن کے اس خطے سے نکلنے کے ایک دن بعد کیے گئے ہیں، اس دورے کے موقع پر بائیڈن نے شمالی کوریا کو روکنے کے لیے اقدامات کو تقویت دینے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔

یاد رہے کہ شمالی کوریا اس سال کے آغاز ہی سے بیلسٹک میزائلوں کا تجربہ کر رہا ہے۔

شمالی کوریا کا نئی قسم کا ٹیکٹیکل گائیڈڈ ہتھیار تجرباتی طور پر فائر

جاپان نے بدھ کے روز کم از کم 2 میزائل داغے جانے کی تصدیق کی ہے لیکن کہا گیا کہ اس سے زیادہ بھی ہو سکتے ہیں، جاپان کے وزیر دفاع نوبو کیشی نے کہا کہ پہلے میزائل نے تقریباً 550 کلو میٹر کی زیادہ سے زیادہ اونچائی کے ساتھ تقریباً 300 کلو میٹر (186 میل) تک پرواز کی، جب کہ دوسرے میزائل نے 50 کلو میٹر کی بلندی تک 750 کلو میٹر کا سفر کیا۔

جاپانی وزیر دفاع نے میزائل تجربات پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ قابل قبول نہیں، انھوں نے کہا اس سے جاپان اور عالمی برادری کے امن، استحکام اور تحفظ کو خطرہ لا حق ہوگا۔ جنوبی کوریا کی قومی سلامتی کونسل نے میزائل تجربات کے بعد بلائے گئے اجلاس میں اسے سنگین اشتعال انگیزی قرار دیا۔

یہ تجربات امریکی صدر جو بائیڈن کے پانچ روزہ دورے کے بعد منگل کی شام امریکا کے لیے روانہ ہونے کے چند گھنٹے بعد کیے گئے، دورے کے دوران وہ جنوبی کوریا اور جاپان گئے۔ امریکی اور جنوبی کوریا کے حکام نے پہلے ہی خبردار کیا تھا کہ شمالی کوریا ممکنہ طور پر بائیڈن کے دورے کے دوران ایک اور ہتھیار کے تجربے کے لیے تیار دکھائی دیتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں