The news is by your side.

Advertisement

امریکا رویہ مناسب کرے تو ملاقات کے لیے تیار ہوں، کم جونگ اُن

پیانگ یانگ : شمالی کوریا کے صدر کم جونگ ان کا کہنا ہے کہ امریکا کے ساتھ ایٹمی تنازعے کے معاملے پر ٹرمپ انتطامیہ کو رواں برس کے اختتام تک مہلت دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن نے جوہری تنازعے کو حل کرنے کے لیے ایک مربتہ پھر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کی خواہش ظاہر کی ہے، کم جونگ کا کہنا ہے کہ امریکا مناسب رویہ اختیار کرے تو ملاقات کے لیے تیار ہوں۔

شمالی کورین صدر نے خطاب کے دوران زور دیتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ ایسے معاہدے کو آگے بڑھائیں جو منصافانہ اور دونوں قوموں کے باہمی طور پر قابل قبول ہو۔

کم جونگ کا کہنا تھا کہ مذکورہ ملاقاتوں نے واقعاً گہرا شک پیدا کردیا تھا کہ امریکا واقعی تعلقات میں بہتری چاہتا ہے، ہم چاہتے ہیں کہ امریکی ہم منصب کے ساتھ تیسری مرتبہ بھی ملاقات کریں اگر امریکا اپنا رویہ مناسب کرے۔

برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق اُن کا کہنا تھا کہ وہ 2019 کے دوران امریکی فیصلے کے منتظر رہیں گے۔

مزید پڑھیں : امریکا اور شمالی کوریا کی ناکام ملاقات کی وجہ ٹرمپ کے کاغذ کا ایک ٹکڑا قرار

شمالی کوریا کے خلاف پابندیوں میں ریلیف دینے پر غور کیا جارہا ہے، ٹرمپ

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ امریکی صدر اور کم جونگ ان کے درمیان پہلی مرتبہ گزشتہ برس سنگاپور میں ملاقات ہوئی تھی جبکہ دوسری مرتبہ دونوں رہنماؤں کی ملاقات رواں برس فروری میں ویتنام کے شہر ہنوئی میں ہوئی تھی تاہم دونوں ملاقاتیں بے سود ثابت ہوئی تھیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کے صدر کم جونگ اُن دو مرتبہ ناکام ملاقاتوں کے باوجود ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ اپنے روابط کو انتہائی شاندار قرار دیتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں