The news is by your side.

Advertisement

اومیکرون کے پھیلاؤ کا خطرہ ، طور خم بارڈر پر صحت کا عملہ دگنا کردیا گیا

پشاور: خیبرپختونخواہ حکومت نے اومیکرون کے خطرے کے پیش نظر طورخم بارڈر پر صحت کاعملہ دگنا کردیا،افغانستان سےآنےوالےافرادکی اسکریننگ اورویکسی نیشن جاری ہے۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ صحت خیبرپختونخواہ نے اومی کرون کے پیش نظر طور خم بارڈر پر صحت کا عملہ دگنا کرتے ہوئے لنڈی کوتل اسپتال میں 130 بستروں پر مشتمل آئسولیشن سینٹر فعال کردیا۔

ڈائریکٹر ہیلتھ کا کہنا ہے کہ افغانستان سےآنےوالےافرادکی اسکریننگ اورویکسی نیشن جاری ہے اور کورونا ٹیسٹ کروانے کے بعد ہی پاکستان میں داخلے کی اجازت دی جاتی ہے۔

ڈائریکٹرپبلک ہیلتھ نے کہا کہ آنے والے افراد کو سنگل شاٹ ویکسین لگائی جاتی ہے اور کوروناٹیسٹ مثبت آنےپرپاکستان میں داخلہ روک دیاجاتاہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پشاورایئر پورٹ پربھی محکمہ صحت کاعملہ تعینات کردیا گیا ہے۔

خیال رہے ملک بھر میں کورونا کیسز میں ہوشربا اضافہ ہورہا ہے ، ایک روز کے دوران کرونا وائرس کے 3 ہزار سے زائد نئے کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ مثبت کیسز کی شرح 7 فیصد سے بڑھ گئی۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کا کہنا تھا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کرونا وائرس کے باعث 7 افراد جاں بحق ہوئے، جس کے بعد کرونا وائرس سے مجموعی اموات کی تعداد 28 ہزار 999 ہوگئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں