The news is by your side.

Advertisement

آج 1 اگست 1960 کو دارالحکومت کراچی سے منتقل ہوا تھا

آج سے 59 برس قبل پاکستان کا پایہ تخت کراچی سے عارضی طور پر راولپنڈی منتقل کیا گیا تھا، جہاں سے اس نے آئندہ کچھ سالوں میں بالکل برابر اسلام آباد منتقل ہوجانا تھا۔

قیام ِ پاکستان کے وقت قائد اعظم محمد علی جناح نے کراچی کو پاکستان کا دارالحکومت قرار دیا تھا۔ سنہ 1958ء تک پاکستان کا دار الحکومت کراچی ہی رہا ، تاہم یہاں کی بہت تیزی سے بڑھتی ہوئی آبادی اور معاشی سرگرمیوں کے سبب دار الحکومت کو کسی دوسرے شہر منتقل کرنے کا سوچا گیا۔

سنہ 1958ء میں اس وقت کے صدر ایوب خان نے راولپنڈی کے قریب اس جگہ کا انتخاب کیا اور یہاں شہر تعمیر کرنے کا حکم دیا۔ اس نئے دار الحکومت کے لیے زمین کا انتظام کیا گیا جس میں صوبہ پختونخواہ اور پنجاب سے زمین لی گئی۔

عارضی طور پر دار الحکومت 1 اگست 1960 کو راولپنڈی منتقل کر دیا گیا اور 1960ء میں اسلام آباد پر ترقیاتی کاموں کا آغاز ہوا۔ شہر کی طرز تعمیر کا زیادہ تر کام یونانی شہری منصوبہ داں کونسٹین ٹینوس اے ڈوکسیاڈس نے کیا۔ 1968ء میں دار الحکومت کو اسلام آباد منتقل کر دیا گیا۔

دار الحکومت بننے کے بعد اسلام آباد نے پاکستان بھر سے لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کیا اور ساتھ ساتھ دار الحکومت کے طور پر اس شہر نے کئی اہم اجلاسوں کی میزبانی بھی کی۔

اسلام آباد سطح مرتفع پوٹوہار میں مارگلہ پہاڑی کے دامن میں واقع ہے۔ اس کی بلندی540 میٹر (1,770 فٹ)ہے۔ یہ نیا شہر اور قدیم شہر راولپنڈی ساتھ ہی واقع ہیں اور جڑواں شہر کہلاتے ہیں۔

دونوں شہروں کے درمیان کوئی سرحدی تعین نہیں ہے۔اسلام آباد کے شمال مشرق میں پہاڑی علاقہ مری وقع ہے اور جنوب مغرب میں ٹیکسلا ، جنوب مشرق میں اٹک شمال مشرق میں کہوٹہ ہے۔یہ شہر 906 مربع کلومیٹر کے رقبے پر پھیلا ہوا ہے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں