The news is by your side.

Advertisement

ہمیں سندھ کو منشیات سے پاک کرنا ہے: مرتضیٰ وہاب

کراچی: ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ کچھ ایشوز پر کرائم میں اضافہ ہوا جس پر کابینہ نے تشویش کا اظہار کیا ہے، دیرپاامن دوبارہ بحال کرنے کیلئے پولیس کو کارکردگی بہتر بنانا ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت صوبائی کابینہ کا اجلاس ہوا، اجلاس کے بعد مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ ہمیں سندھ کو منشیات سے پاک کرنا ہے، کوئی افسر منشیات کی سرپرستی کررہا ہے تو اس کے خلاف کارروائی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ آئی جی اور اے آئی جی کو سختی سے منشیات کے خلاف ایکشن کی ہدایت کی، منشیات کے کاروبار میں ملوث کالی بھیڑوں کی نشاندہی کی جائے، پولیس سے منشیات کے کاروبار کیخلاف پیش رفت رپورٹ مانگی گئی ہے۔

مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ منشیات کے کاروبار میں ملوث پولیس افسران کے خلاف کارروائی کی جائے، غیرقانونی فیکٹریوں کیخلاف کارروائی کیلئے متعلقہ پولیس تعاون کرے، پولیس کی ذمہ داری ہے غیرقانونی فیکٹریاں ڈی سیل نہ ہوں۔

ترجمان کے مطابق سندھ حکومت کے ہر ادارے میں خواجہ سرا کیلئے 0.5فیصد کوٹہ ہوگا، سندھ پولیس کو چھوٹے ہتھیار کی خریداری کی اجازت اور امل عمر ایکٹ بل کے قوانین کی سندھ کابینہ نے منظوری دیدی ہے۔

سندھ کابینہ نے خواجہ سراؤں کیلیے نوکریوں کا کوٹہ مقرر کرنے کی منظوری دیدی

شعبہ صحت سے متعلق مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ محکمہ ہیلتھ کو اسپتالوں کا ڈیٹا اکٹھا کرنے کی ہدایت کی گئی ہے، سندھ حکومت انجرڈپرسن ایکٹ کے تحت علاج کے اخراجات اٹھائے گی، تمام اسپتالوں میں کسی بھی زخمی شخص کامفت علاج ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ منصوبوں سے متعلق تمام اقدامات صوبائی حکومت نے کئے، خسروبختیار نے کریڈٹ لینے کی کوشش کی ہے، یہ تاثر غلط ہے، وفاقی نمائندے غلط بیانی سے گریز کریں، امن وامان پر وزیراعلیٰ سندھ کو آئی جی اور اےآئی جی نے بریفنگ دی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں