The news is by your side.

Advertisement

کیا نوازشریف سے اے سی اور ٹی وی کی سہولیات واپس لے لی گئیں؟

لاہور: اب مجرم کو جیل میں نہ تو اے سی ملے گا، نہ ٹی وی کی سہولت میسر ہوگی، منی لانڈرنگ کے مجرمان سے بی کلاس کی سہولت واپس لے لی جائیں گی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے  وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر مکمل عمل درآمد کا فیصلہ کر لیا، اس ضمن میں  جیل حکام کو لکھا گیا خط سامنے آگیا۔

اس کا اطلاق کوٹ لکھپت میں قید سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف پر بھی ہوگا، جنھیں بی کلاس کی سہولت میسر ہیں۔ 

معاون اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے بھی آج کراچی میں اپنے بیان میں کہا کہ جیل میں ٹی وی اور اے سی کی سہولت قانون کے ساتھ مذاق ہے۔قیدی قیدی ہوتا ہے ، ہماری حکومت جیل میں اے یا بی کلاس کی تفریق کا خاتمہ کرنے آئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ماضی میں امیر اورغریب کےلئے علیحدہ قانون بناکر رکھا تھا ۔جیل میں کوئی امامت کے لئے نہیں سزا بھگتنے جاتا ہے۔ 

مزید پڑھیں: شریف پر قومی خزانے سے کتنے پیسے خرچ ہوئے؟ مراد سعید کے اہم انکشافات

خیال رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے دورے امریکا کے موقع پر عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ وہ وطن واپس جا کر  جیل سے اسے سی نکلوائیں گے.


شہباز گل کی تردید

وزیر اعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل نے اپنے حالیہ بیان میں اس بات کی تردید کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ جیل میں نوازشریف سے خصوصی مراعات واپس نہیں لی گئیں۔

انھوں نے کہا کہ آج اور کل محکمہ داخلہ نےآئی جی جیل خانہ جات کوکوئی ہدایت نہیں دی، نواز شریف کی خصوصی مراعات کےمعاملے پر قانون دیکھاجائے گا،  پی ٹی آئی حکومت سیاسی مخالفین کو سیاسی انتقام کانشانہ نہیں بناتی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں