The news is by your side.

Advertisement

‏’اوورسیز کو انٹرنیٹ ووٹنگ کاجو حق دے رہے ہیں ہمیں بھی دیں‘‏

سابق وزیراعظم و سینئر نائب صدر مسلم لیگ ن شاہدخاقان عباسی نے کہا ہے کہ اوورسیز کو ووٹ کا حق ‏پہلے سے ہی حاصل ہے اوورسیزکو انٹرنیٹ ووٹنگ کاجوحق دےرہےہیں ہمیں بھی دیں۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے شاہدخاقان عباسی نے کہا کہ مجھےنہیں ‏لگتاپاکستان میں کبھی ای وی ایم پرالیکشن ہوں گے الیکشن کراناحکومت کی نہیں الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ‏ہے الیکشن کمیشن نے کہہ دیا ای وی ایم فرسودہ نظام ہے تو پھر نہیں استعمال ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن جہاں چوری ہوں نظام چھیڑیں گےتومزیدشکوک پیدا ہوں گے اوورسیزپاکستانی انٹرنیٹ ‏پر کیسے ووٹنگ کرینگے، دونظام کیوں بنارہےہیں دوسرےممالک میں انٹرنیٹ ووٹنگ کانظام ہےتووہاں کانظام بھی ‏دیکھ لیں ووٹنگ کےدوقسم کےنظام رائج نہیں کرسکتے اوورسیزکو جوممالک ووٹ کی اجازت دیتےہیں وہاں ‏طریقہ کاردیکھ لیں الیکشن سنجیدہ معاملہ ہے الیکشن پرہی ملک ٹوٹاتھا،تماشےنہ لگائیں۔

شاہدخاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی اور اےاین پی کوپی ڈی ایم کافیصلہ نہ ماننے پر شوکاز دیا تھا ‏پیپلزپارٹی کو بی اے پی کے ووٹ لینے پر شوکاز نہیں دیاتھاپیپلزپارٹی نےپی ڈی ایم کافیصلہ توڑکربی اےپی ‏سے ووٹ لیاتھا ووٹ کسی سےلیں ان کی مرضی لیکن اعتماد توڑا گیاجس پر شوکاز دیا پی ڈی ایم اجلاس میں ‏فیصلہ ہواجسےتوڑکرحکومتی بینچ سےووٹ لیاگیا۔

ان کا کہنا تھا کہ میری نظرمیں تحریک عدم اعتمادکاموقع سینیٹ میں ہے پنجاب میں بھی تحریک عدم اعتماد کر ‏لیں لیکن وہاں بہت گیم ہے پنجاب میں پولیس، رینجرز لوگ اٹھا کر لےجائےگی تو پھر کیا کریں گے جہاں نظام ‏آئین کےمطابق ہی نہ ہووہاں کیاکام کرسکتےہیں ملک میں تماشےکرتےرہیں گےتوکبھی آگےنہیں بڑھیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں