پاک ترک اسکول دہشت گرد ادارے نہیں،بند نہ کیا جائے، مظاہرین کا مطالبہ -
The news is by your side.

Advertisement

پاک ترک اسکول دہشت گرد ادارے نہیں،بند نہ کیا جائے، مظاہرین کا مطالبہ

پشاور: وفاقی حکومت کی جانب سے پاک ترک اسکولوں میں پڑھانے والے اساتذہ کو 3 دن کے اندر ملک سے چلے جانے کے حکم کے خلاف پشاور میں اساتذہ اور طلبا اور طالبات نے حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق مظاہرے میں اساتذہ، بچوں کے والدین سمیت ترک اساتذہ کے خاندان کے افراد نے بھی حصہ لیا اور اپنے مطالبات کے حق میں نعرے بازی کی۔

اساتذہ کا مطالبہ تھا کہ ترک اسکول میں پڑھانے والے ترکش اساتذہ نہ تو دہشت گرد ہیں اور نہ ہی علم دشمن، نواز شریف بچوں کا مستقبل تاریک کرنے کے بجائے ان اساتذہ کی واپسی کا فیصلہ واپس لیں۔

پاک ترک اسکول پشاور میں 9 ترکش اساتذہ خدمات سر انجام رے رہے ہیں جو کہ اپنے اہلِ خانہ سمیت پشاور میں رہائش پزیر ہیں مظاہرے میں شریک طلبا نے گو نواز گو اور طیب اردگان مردہ باد کے نعرے بھی بلند کیے۔

واضح رہے 15 جولائی کو ترک میں ناکام فوجی بغاوت کے بعد اپوزیشن رہنما گولن کو مشکوک نگاہ سے دیکھا جا رہا تھا جس کے بعد گولن کے زیر انتظام چلنے والے تعلیمی اداروں پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

ترک انتظامیہ کی درخواست پر حکومتِ پاکستان نے گولن کے زیرِ انتظام چلنے والے پاک رتک اسکولوں کو بند کرنے اور ترک اساتذہ کو واپس اپنے ملک بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا تھا قبل ازیں ترک حکومت نے ان اسکولوں کے ترک سربراہان کو فارغ کر کے پاکستانی اساتذہ کو چانسلر مقرر کردیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں