The news is by your side.

Advertisement

ایف 16 طیارے سجانے کے لیے نہیں رکھے، کسی بھی ملک کے خلاف استعمال ہوسکتے ہیں، سفارتی ذرائع

اسلام آباد: سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان دفاع کے لیے کسی بھی ملک کے خلاف ایف 16 کا استعمال کرسکتا ہے، طیارے سجانے کے لیے نہیں خریدے گئے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کی جانب سے دعویٰ کیا گیا تھا کہ پاکستان نے 26 فروری کی صبح بھارتی طیاروں کو گرانے کے لیے ایف 16 طیاروں کا استعمال کیا۔ بھارتی افواج کے سربراہان یا حکومتی نمائندے اس بات کا ثبوت پیش نہیں کرسکے بلکہ وہ ایک چادر کا ٹکڑا ہی اٹھائے اپنی دعوے کا دہراتے نظر آئے۔

بھارتی میڈیا کے چند چینلز نے ایف سولہ طیاروں کا ثبوت نہ ملنے پر نسوار کی پڑیاں تک دکھائیں تاکہ وہ عالمی دنیا اور اپنے عوام کو بے وقوف بنا سکیں مگر انہیں ہر پاکستان کے خلاف ناکام دراندازی کے بعد انہیں ہر موڑ پر ہی ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

مزید پڑھیں: ایف 16 طیارے کا استعمال؟ بھارتی میڈیا نے نسوار کی تھیلی بطور ثبوت پیش کردی

بھارت نے دعویٰ کیا تھا کہ اُس نے ایف سولہ طیارہ استعمال کرنے کے شواہد امریکا کو فراہم کردیے البتہ تین ہفتے گزر جانے کے باوجود جہازوں کے استعمال پر وائٹ ہاؤس انتظامیہ نے کوئی رابطہ نہیں کیا۔

سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکا سے معاہدے کے تحت پاکستان کسی بھی ملک کے خلاف ایف 16 طیارے استعمال کرسکتا ہے، اس ضمن میں کوئی خاص شرط یا پابندی نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں: بھارتی تجزیہ کار نے اپنی ہی فضائیہ کا پاکستانی ایف 16 گرانے کا دعویٰ رد کر دیا

سفارتی ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان نےایف16طیارےڈیکوریشن پیس کےلئےنہیں خریدے، امریکا نے 3 ہفتے بعد بھی ایف16 استعمال کے معاملے پرکوئی رابطہ نہیں کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں