The news is by your side.

Advertisement

قندوز مدرسہ حملہ: پاکستان کی جانب سے افغان میڈیا کے الزامات کی مذمت

اسلام آباد: افغانستان کے شہر قندوز میں مدرسے پر حملے سے متعلق افغان میڈیا کے پاکستان پر لگائے گئے سنگین الزامات کی دفتر خارجہ نے شدید مذمت کر دی۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ دنوں افغانستان میں واقع مدرسے پر افغان فورسز کی جانب سے فضائی کارروائی کی گئی تھی جس کے نتیجے میں بچوں سمیت درجوں افراد جاں بحق ہوئے تھے، جس کے بعد افغان میڈیا نے پاکستان پر سنگین الزامات عائد کیے۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا ہے کہ افغان میڈیا کے ایک حصے نے مدرسہ حملے سے متعلق انتہائی سفاک اور بے رحمانہ الزامات لگائے، افغان میڈیا کی جانب سے لگائے گئے الزامات بے بنیاد اور غیر ذمہ دارانہ ہیں۔

قندوز میں مدرسے پر حملہ: افغان صدر نے تحقیقات کا حکم دے دیا

ترجمان کا کہنا تھا کہ الزام تراشی حادثے سے غلط نتائج حاصل کرنے کی بھونڈی کوشش ہے، دونوں ممالک کے درمیان بہتر تعلقات نہ چاہنے والے ایسی کوشش کر رہے ہیں جو ناکام ہوں گے۔

ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ پاکستان ایسے حادثات کا شکار رہا ہے، ہم دکھ کو سمجھتے ہیں، غم کی اس گھڑی میں لواحقین کے ساتھ ہیں، پاکستان متاثرہ افغان خاندانوں کے ساتھ دلی دکھ کا اظہار کرتا ہے، ہم دیرپا امن کے لیے ہر طرح کا تعاون جاری رکھیں گے۔

افغانستان: ملکی فورسز کا مدرسے پر فضائی حملہ، 20 جاں بحق، متعدد زخمی

خیال رہے کہ گذشتہ دنوں افغان صوبہ قندوز کے ضلع دشت آرچی میں واقع مدرسے پر افغان فورسز کی جانب سے فضائی حملہ کیا گیا تھا۔

فورسز کے مطابق یہ حملہ طالبان کے تربیتی مرکز پر کیا گیا تھا جہاں انہیں طالبان کمانڈروں کی موجودگی کی اطلاع ملی تھی، تاہم بعد ازاں حملے میں بچوں اور عام شہریوں کی ہلاکت کی تصدیق ہوئی جس میں 50 کے قریب افراد مارے گئے تھے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں