The news is by your side.

Advertisement

جان بچانے والی سی پی آر ٹریننگ نصاب میں شامل کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد: حکومت پاکستان نے جان بچانے والی سی پی آر ٹریننگ نصاب میں شامل کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم شہباز شریف نے پاکستان میں شعبہ صحت کی بہتری کے لیے اہم قدم اٹھاتے ہوئے ملک گیر سی پی آر ٹریننگ کے انعقاد کی ہدایت جاری کر دی ہے۔

اسٹریٹجک ریفارمز کے سربراہ سلمان صوفی کو وزیر اعظم نے ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں فوری اقدامات کیے جائیں۔

سلمان صوفی نے بتایا کہ سی پی آر ٹریننگ لاکھوں زندگیاں بچانے میں معاون ثابت ہوگی، سی پی آر ٹریننگ کو اسکولوں کے نصاب میں بھی شامل کیا جائے گا۔

سی پی آر کیا ہے؟

سی پی آر کارڈیو پلمونری ریسسیٹیشن کا محفف ہے، سی پی آر ہنگامی حالت میں مریض کو ہوش میں لانے کے لیے چھاتی کو دبانے اور منہ سے منہ جوڑ کر سانس بحال کرانے کا عمل ہے۔

دراصل سی پی آر جان بچانے کا ایک طریقۂ کار ہے، جو اُس وقت آزمایا جاتا ہے، جب اچانک ہی مریض کے دل کی دھڑکن بند ہو جائے یا پھر اُسے سانس لینے میں انتہائی شدید دشواری محسوس ہو رہی ہو۔

اگر یہ عمل اچھی طرح کیا جائے تو ایسے مریض جنھیں دل کا دورہ پڑا ہو، ان کا دوران خون اور سانس بحال کرنے میں اس سے مدد مل جاتی ہے۔

سی پی آر کی جن ایمرجنسیوں میں ضرورت پڑتی ہے، ان میں دل کا دورہ، ڈوبنا، دم گھٹنا، بجلی کا جھٹکا لگنا، زہر خورانی، اور الرجی کے رد عمل سے جان کا خطرہ شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں