The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کی تاریخ کے مہنگے ترین انتخابات، اخراجات اتنے کہ اس کی مثال نہیں ملتی

اسلام آباد : 25 جولائی کو ہونے والے انتخابات ملکی تاریخ کے مہنگے ترین الیکشنز ہوں گے، اخراجات گزشتہ انتخابات سے تین گنا زائد ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کل ملکی تاریخ کے مہنگے ترین انتخابات ہونے جارہے ہیں، اخراجات اتنے کے مثال نہیں ملتی، انتخابات پر20 ارب روپے سے زائد کے اخراجات کا تخمینہ لگایا گیا ہے، یہ تمام اخراجات وفاق کے ہیں۔

صوبوں کی جانب سے کئے جانے والے اخراجات اس کےعلاوہ ہیں۔

اخراجات میں سے ساڑھے دس ارب پولنگ کی مد میں یعنی ٹریننگ، پرنٹنگ، مشاہروں، ٹرانسپورٹیشن اور دیگر متعلقہ امور پر خرچ ہوں گے جبکہ فوج تعیناتی پر اخراجات تخمینہ تقریبا ساڑھے دس ارب روپے ہے۔

اخراجات میں اضافے کی وجہ واٹرمارکڈ درآمدی کاغذ اور مشاہروں میں اضافہ ہے۔

دو ہزارآٹھ میں کے عام انتخابات کے مجموعی اخراجات ایک ارب چوارسی کروڑ جبکہ سال 2013 میں 4  ارب 73  کروڑ روپے تھے۔

اس انتخابات میں  پولنگ عملے کے اعزازیہ اور پریذائیڈنگ افسران ، اسسٹنٹ پریذائیڈنگ افسران اور پولنگ افسران کا اعزازیہ تقریبا دگنا ہو چکا ہے، پریزائیڈنگ افسر کو 8 ہزار روپے اور پولنگ افسر کو6 ہزار روپے دئیے جائیں گے۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے قومی اسمبلی کے امیدوار کے لیے حلقے میں انتخابی اخراجا ت کی حد 40 لاکھ جبکہ صوبائی اسمبلی کے لیے 20 لاکھ روپے مقرر کی تھی۔

الیکشن کمیشن کے سیکریٹری بابر یعقوب کا انتخابی عمل کے اخراجات میں واضح اضافہ بیرونِ ملک سے برآمد کئے جانے والے واٹر مارک والے بیلٹ پیپر کے باعث ہوا، اس کے ساتھ انتخابی عملے کو دیا جانے والا معاوضہ بھی 3 ہزار روپے سے بڑھا کر 8 ہزار روپے کردیا گیا۔

خیال رہے کہ ملک بھر میں عام انتخابات کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہے، کل دس کروڑ پچپن لاکھ سے زائد ووٹرز حق رائے دہی استعمال کریں گے ۔

قومی اورصوبائی اسمبلیوں کی نشستوں کےلیےآزادامیدواروں سمیت مختلف سیاسی جماعتوں کےگیارہ ہزارسےزائد امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہے،پولنگ صبح آٹھ بجے سے بلا تعطل شام 6بجے تک جاری رہے گی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں