The news is by your side.

Advertisement

ستارہ: نیٹ فلکس پر پاکستان کی پہلی فلم

آسکر ایوارڈ یافتہ پاکستانی ہدایت کارہ شرمین عبید چنائے اور اے آر وائی فلمز ایک اور بہترین اینی میشن فلم پیش کرنے جارہے ہیں جو نیٹ فلکس پر ریلیز ہوگی، یہ نیٹ فلکس پر پیش کی جانے والی پہلی پاکستانی فلم ہوگی۔

اینی میشن فلم ’ستارہ‘ کم عمری کی شادی اور لڑکیوں کو ان کے خواب پورے کرنے سے روکے جانے کے متعلق ہے اور یہ نیٹ فلکس پر ریلیز ہونے والی پہلی پاکستانی فلم کا اعزاز حاصل کرلے گی۔

ستارہ شرمین عبید چنائے (ایس او سی) فلمز، وادی اینی میشنز اور اے آر وائی فلمز کے اشتراک سے پیش کی جارہی ہے۔ شرمین عبید چنائے، سلمان اقبال اور جرجیس سیجا فلم کے پروڈیوسرز ہیں جبکہ اینی میشن ڈائریکٹر کامران خان ہیں۔

اینی میشن فلم ستارہ دو بہنوں پری اور مہر کی کہانی ہے۔ فلم میں 70 کی دہائی میں لاہور کے مناظر دکھائے گئے ہیں جہاں یہ دونوں بہنیں اپنے چھوٹے سے گھر میں پڑھتی لکھتی اور کھیلتی دکھائی دیتی ہیں۔

یہ دونوں بہنیں بڑی ہو کر پائلٹ بننا چاہتی ہیں اور یہ روز اپنی چھت پر کاغذ کے جہاز بنا کر اڑاتی ہیں۔

ایک روز اچانک پری کے والد اس کے لیے ایک سرخ جوتا لاتے ہیں اور بتاتے ہیں کہ انہوں نے اس کی شادی کا فیصلہ کرلیا ہے۔ 14 سالہ پری سمیت گھر میں کوئی بھی ان کے اس فیصلے سے خوش نہیں۔

فلم کی کہانی ننھی مہر کی زبانی ہے جو پھر ایک روز اپنی بہن کو زیورات میں لدی پھندی، سرخ جوڑے میں ملبوس دیکھتی ہے، جب اسے پتہ چلتا ہے کہ وہ اب اس گھر سے جارہی ہے تو وہ رونے لگتی ہے۔

فلم اپنے دیکھنے والوں کے ذہنوں میں یہ سوال چھوڑ دیتی ہے کہ آخر کیوں لڑکیوں کو خواب دیکھنے اور اس کی تکمیل کرنے سے روکا جاتا ہے۔

افسوسناک بات یہ ہے کہ کئی دہائیوں پہلے کی یہ کہانی آج 21 ویں صدی میں بھی دنیا میں کہیں نہ کہیں، کسی نہ کسی معاشرے میں دہرائی جارہی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں