The news is by your side.

Advertisement

کالعدم تنظیموں کے خلاف کریک ڈاؤن، 44 افراد زیرِ حراست

اسلام آباد: پاکستان میں کالعدم تنظیموں کے خلاف باقاعدہ کارروائی شروع کر دی گئی ہے، وزارتِ داخلہ کے ایکشن کے تحت کالعدم تنظیموں کے 44 ارکان زیرِ حراست لے لیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی اور سیکریٹری داخلہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزارتِ داخلہ نے کالعدم تنظیموں کے خلاف ایکشن کا آغاز کر دیا ہے، کالعدم تنظیموں کے 44 ارکان حراست میں لیے گئے۔

کالعدم تنظیموں کے خلاف بلا امتیاز کارروائی جاری رہے گی۔

شہریار آفریدی

زیرِ حراست لیے گئے ارکان میں مفتی عبدالرؤف اور حماد اظہر بھی شامل ہیں۔

سیکریٹری داخلہ کا کہنا ہے کہ کارروائی این اے سی (نیشنل ایکشن کمیٹی) کے فیصلوں کی روشنی میں جاری رہے گی، جنھیں حراست میں لیا گیا ان کے خلاف تحقیقات کی جائیں گی۔

سیکریٹری داخلہ نے مزید کہا کہ تحقیقات میں کچھ ثابت ہوا تو کارروائی کی جائے گی، ہمارا ایکشن 2 ہفتے تک جاری رہے گا، مزید ثبوت ملے تو کسی کو بھی اپنی تحویل میں لے سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان کا کالعدم تنظیموں‌ کے حوالے سے اہم قدم

شہریار آفریدی نے کہا کہ ہم نہیں چاہتے کہ پاکستان پر باہر سے الزام تراشیاں ہوتی رہیں، پاک سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہوگی، کوئی دوسرا ملک بھی دخل اندازی نہیں کر سکے گا۔

وزیرِ مملکت برائے داخلہ نے کہا کہ کالعدم تنظیموں کے خلاف بلا امتیاز کارروائی جاری رہے گی، نئے پاکستان میں قانون کی بالا دستی کا عزم کیا ہوا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں