The news is by your side.

Advertisement

سی پیک اور دیگر میگا پروجیکٹ کے لیے اب ستر فیصد پاکستانی انجینئرز بھرتی کیے جائیں گے: چیئرمین پی ای سی

اسلام آباد: پاکستان انجینئرنگ کونسل( پی ای سی) کے چیئرمین جاوید سلیم قریشی نے کہا ہے کہ سی پیک اور دیگر میگا پروجیکٹ کے لیے اب ستر فیصد پاکستانی انجینئرز بھرتی کیے جائیں گے، انجینئرز ذاتی کمپنیاں بھی کھول سکتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا، چیئرمین پی ای سی نے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ اب پاکستان کے انجینئرز دنیا بھر کے باقی انجینئرز کی طرح مارکیٹ میں کام کریں گے، انہیں کسی قسم کی پریشانی درپیش نہیں آئے گی، پاکستانی انجینئرز نوکریوں کے لیے دنیا بھر میں کہیں بھی اپلائی کرسکتے ہیں اور ذاتی کمپنیاں بھی کھول سکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ابھی دنیا کے انیس ممالک کو انٹرنیشنل پروفیشنل انجینئرنگ لائسنس جاری کرنے کا اختیا ر دیا گیا ہے جبکہ سی پیک اور دیگر میگا پروجیکٹ کے لیے اب ستر فیصد پاکستانی انجینئرز بھرتی کیے جائیں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ انٹرنیشنل پروفیشنل انجینئرنگ لائسنس جاری کرنے کا اختیار ملنا پاکستان کے لیے اعزاز ہے، پاکستان کے انجینئرز کو انٹرنیشنل پروفیشنل انجینئرنگ لائسنس ملک میں جاری ہوگا۔


پاکستانی انجینئرز کے لیے خوش خبری


خیال رہے کہ گذشتہ روز برطانیہ میں جنیوا معاہدے کے تحت پاکستان انجینئرنگ کونسل کے چیئرمین جاوید سلیم کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں پی ای سی کو نیا اعزاز دینے سے متعلق گفتگو کی گئی تھی۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں پاکستان انجینئرنگ کونسل کو انٹرنیشنل پروفیشنل انجینئرنگ لائسنس جاری کرنے کا اختیار دیا گیا جس کے بعد اب وہ لائسنس جاری کرسکتی ہے۔

واضح رہے کہ انٹرنیشنل پروفیشنل انجینئرنگ لائسنس جاری کرنے کا اختیار ملنا پاکستان کے لیے بہت بڑا اعزاز ہے کیونکہ اس سے پاکستان کے انجینیئرز کی عالمی مارکیٹ میں مانگ بڑھ جائے گی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں