The news is by your side.

Advertisement

انڈونیشیا میں سونامی سے تباہی، پاکستان کا اظہار افسوس

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ نے انڈونیشیا میں آنے والے سونامی سے جانی و مالی نقصانات پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔

دفتر خارجہ کے ترجمان کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ میں کہا گیا کہ انڈونیشیا میں سونامی کی وجہ سے قیمتی جانیں ضائع اور ہزاروں افراد زخمی ہوئے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے جانی و مالی نقصانات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشکل کی اس گھڑی میں پاکستان انڈونیشیا کے بھائیوں کے ساتھ کھڑا ہے۔

یاد رہے کہ انڈونیشیا کے مقامی وقت کے مطابق 23 دسمبر کی صبح چار بجے آبنائے سنڈا کے ساحل سے سونامی ٹکرایا جس کے نتیجے میں بہت زیادہ نقصان ہوا۔

انڈونیشیا کے حکام کا کہنا تھا کہ سونامی نے سب سے زیادہ جزیرے کراکاٹوا کو نقصان پہنچایا کیونکہ وہاں آتش فشانی کے باعث لہریں پیدا ہوئیں اور تباہی مچ گئی۔

مزید پڑھیں: انڈونیشیا میں سونامی سے 168 افراد ہلاک

اب تک موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق سونامی کے باعث 168 افراد ہلاک اور 700 سے زائد افراد زخمی ہوئے جبکہ سیکڑوں لاپتہ ہوگئے اور کئی مکانات بھی مکمل تباہ ہوئے۔

قبل ازیں رواں سال اکتوبر میں انڈونیشیا کے جزیرے سولاویسی اور پالو سمندری طوفان کی زد میں آیا تھا جس کے نتیجے میں 1500 سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ رواں سال اگست میں انڈونیشیا کے سیاحتی جزیرے لومبوک میں زلزلے کے نتیجے میں 347 ہلاک اور سینکڑوں افراد زخمی ہوئے تھے۔

واضح رہے کہ انڈونیشیا بحرالکاہل کے ایک ایسے حصے میں واقعہ ہے جہاں زلزلے آنے اور آتش فشاں پھٹنے کے واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں اور دنیا بھر کے تقریباً آدھے آتش فشاں اسی حصّے میں پائے جاتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں