The news is by your side.

پاکستان کی معاشی صورت حال، حکومت نے اعداد و شمار جاری کر دیے

اسلام آباد: پاکستان کی معاشی صورت حال سے متعلق حکومت نے اعداد و شمار جاری کر دیے، گزشتہ سال کی نسبت رواں سال ایکسپورٹ مصنوعات میں 27 فی صد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

پارلیمانی سیکریٹری کامرس عالیہ حمزہ نے معاشی اعشاریوں کی تفصیلات جاری کرتے ہوئے کہا ایکسپورٹ گڈز 12.35 ارب ڈالر تک پہنچ گئی ہیں، رواں سال ٹیکسٹائل ایکسپورٹس میں 30 فی صد اضافے کے ساتھ یہ 7.84 ارب ڈالر ہو گئی ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ آئی ٹی ایکسپورٹس میں بھی 39 فی صد اضافہ ہوا، جولائی تا اکتوبر 2022 میں آئی ٹی ایکسپورٹس 830 ملین ڈالر رہیں۔

سال 2022 کے پہلے چار ماہ میں ایکسپورٹ سروسز میں 25 فی صد اضافہ ریکارڈ ہوا، ایکسپورٹ سروسز جولائی سے اکتوبر 2022 میں 2.12 ارب ڈالر، گزشتہ سال 1.70 ارب ڈالر تھی۔

رواں مالی سال کے پہلے 4 مہینوں میں ترسیلات زر میں 12 فی صد اضافہ ہوا اور ترسیلات زر 10.55 ارب ڈالر تک پہنچ گئیں۔

زر مبادلہ کے ذخائر میں 13 فی صد اضافہ ہوا، گزشتہ سال کی نسبت رواں سال ایف بی آر ریونیو میں 37 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا، جولائی سے نومبر 2022 میں 2314 ارب روپے کا ریونیو اکٹھا ہوا، گزشتہ سال جولائی سے نومبر 2021 میں 1695 ارب روپے ٹیکس جمع ہوا تھا، نومبر 2022 میں ٹیکس کولیکشن 22.5 ارب ڈالر، گزشتہ سال 20.2 ارب ڈالر تھی۔

پاکستان میں کاروں کی فروخت میں 71 فیصد اضافہ ہوا، رواں سال کے 4 ماہ میں 74,952 کاریں خریدی گئیں، سال 2021 کے چار مہینوں میں 43,865 کاریں فروخت ہوئیں، حکومتی بہترین پالیسی کی وجہ سے ٹریکٹرز کی سیلز میں 14 فیصد اضافہ ہوا، رواں سال کے 4 ماہ میں 17,386 ٹریکٹرز فروخت، گزشتہ سال 15,245 ٹریکٹرز فروخت ہوئے۔

ڈومیسٹک سیمنٹ کی سیلز میں ایک فیصد اضافہ ہوا، جولائی سے اکتوبر 2022 میں 15.90 ملین ٹن، 2021 میں 15.70 ملین ٹن رہی، گزشتہ سال کی نسبت رواں سال فرٹیلائزر یوریا کی سیلز 10 فیصد بڑھیں، رواں سال کے چار ماہ میں 5,081 ٹن، گزشتہ سال 4,626 ٹن یوریا کی سیلز رہیں۔

گزشتہ سال کی نسبت رواں سال پٹرولیم سیلز میں 22 فیصد اضافہ ہوا، رواں سال 7.85 ملین ٹن، گزشتہ سال 6.44 ملین ٹن پیٹرولیم مصنوعات کی سیلز رہیں۔

گزشتہ سال کی نسبت رواں سال کاٹن کی سیلز میں 54 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا، رواں سال 7.17 ملین بیلز، گزشتہ سال 4.65 ملین بیلز کی سیلز رہیں۔

بجلی کی کھپت کے باعث رواں سال بجلی کی پیداوار 10 فیصد زیادہ کی گئی، رواں سال کے 4 ماہ میں 1 لاکھ 19 ہزار 262 گیگا واٹ بجلی پیدا ہوئی، گزشتہ سال 1 لاکھ 8 ہزار 88 گیگا واٹ بجلی پیدا ہوئی۔

پاکستان میں ایئر کنڈیشنز، فریج، ڈیپ فریزر اور الیکٹرک پنکھوں کی پیداوار میں بھی اضافہ ہوا، موٹر سائیکل کی فروخت میں بھی اضافہ ہوا، لارج سکیل مینوفیکچرنگ انڈیکس میں 5 فیصد اضافہ ہوا، انڈیکس رواں سال 139.50، گزشتہ سال 132.60 رہی۔

ن لیگ اپنے دور میں 284 ارب ڈالر جی ڈی پی چھوڑ کر گئی، موجودہ حکومت میں جی ڈی پی تاریخ کی دوسری بلند ترین سطح 315 ارب ڈالر پر پہنچ چکی ہے، زرعی کریڈٹ ادائیگی میں 6 فیصد اضافہ ہوا، رواں سال زرعی کریڈٹ ادائیگی 381 ارب روپے، گزشتہ سال 358 ارب روپے تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں