The news is by your side.

قومی کھلاڑیوں کا سینٹرل کنٹریکٹ پر تحفظات کا اظہار

قومی کرکٹ ٹیم کےبڑے ناموں نے نئے سینٹرل کنٹریکٹ پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔

کھیلوں کی معروف ویب سائٹ کرک انفونےدعوٰی کیا ہے بابراعظم، شاہین آفریدی اور محمد رضوان حالیہ سینٹرل کنٹریکٹ سے خوش نہیں۔

ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق کھلاڑیوں نے کنٹریکٹ کی کچھ شقوں میں ترمیم کے بعد دستخط کرنے پر مشروط آمادگی ظاہر کی اور کہا ایشیا کپ کے بعد این او سی سمیت دیگر معاملات پر دوبارہ سے بات چیت ہو گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے دوہزار بائیس اور تئیس کے سیزن کیلئے تینتیس کھلاڑیوں کو علیحدہ کیٹگریز میں سینٹرل کنٹریکٹ دئیے تھے۔

کپتان بابر اعظم سمیت 5 کھلاڑیوں کو ریڈ اوروائٹ بال دونوں فارمیٹ کے کنٹریکٹ ملے، 10 کھلاڑیوں کو صرف وائٹ بال کا کنٹریکٹ ملا جب کہ 11 کھلاڑیوں کو صرف ریڈ بال کا کنٹریکٹ دیا گیا۔

اس کے علاوہ ڈومیسٹک کرکٹ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے سات کھلاڑی ایمرجنگ کٹیگری کا حصہ بنے تھے۔

چیف سیلکٹر نے بتایا کہ فہرست میں بابراعظم، محمد رضوان اور شاہین شاہ آفریدی ریڈ بال اور وائیٹ بال دونوں طرز کی کرکٹ کے کنٹریکٹ کی اے کٹیگریزمیں شامل ہیں، حسن علی ریڈ بال میں بی اور وائیٹ بال میں سی کٹیگری کا حصہ ہیں، امام الحق کو ریڈ بال میں سی اور وائیٹ بال میں بی کٹیگری دی گئی ہے۔

اظہرعلی ریڈ بال کنٹریکٹ کی اے جبکہ فواد عالم بی کٹیگری میں شامل کئے گئےہیں اسی طرح عبداللہ شفیق، نسیم شاہ اور نعمان علی ریڈ بال کی سی کٹیگری کا حصہ ہیں، فخر زمان اور شاداب خان وائٹ بال کنٹریکٹ کی کٹیگری اے میں شامل ہیں۔حارث رؤف بی اور محمد نواز کٹیگری سی کا حصہ ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں