The news is by your side.

Advertisement

کرونا وبا: جنوری امریکا کے لیےمہلک ترین مہینہ قرار، ریکارڈ ہلاکتیں

واشنگٹن: امریکا میں کرونا ویکسی نیشن کے باوجود عالمی وبا کرونا سے ہلاکتوں کی تعداد میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے، ایسے میں امریکی میڈیا کی جانب سے جاری رپورٹ نے کھبلی مچادی ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ سال دوہزار اکیس کا پہلا مہینہ جنوری امریکا کےلیےمہلک ترین ثابت ہوا، جنوری میں امریکا میں وائرس سے95ہزار 245 افرادجان سےگئے، جس کے بعد امریکا میں کرونا سےاموات کی تعداد 4 لاکھ 54 ہزار ہوگئی ہے۔

امریکی میڈیا کے مطابق امریکا میں کرونا سے بچاؤ کے لئے ویکسی نیشن کا عمل بھی جاری ہے اور اس کے نتیجے میں کرونا میں مبتلا ہونے والے افراد کی تعداد میں کچھ کمی واقع ہوئی ہے اور اسپتالوں میں کرونا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد بھی کچھ کم ہوئی ہے، مگر اس کے باوجود جنوری میں 95 ہزار ہلاکتیں ہونا لمحہ فکریہ ہے۔

امریکی میڈیا کے مطابق اس وقت امریکا میں عالمی وبا سے روزانہ کی بنیاد پر ہلاکتوں کی اوسط 3150 ہے جبکہ عالمی وبا سے متاثر ین کی تعداد 2 کروڑ 69 لاکھ ہوگئی ہے۔دوسری جانب بھار ت میں بھی کرونا سے متاثرین کی تعداد ایک کروڑ سے تجاوز کرگئی ہے، بھارت میں ایک گھنٹے کے دوران 8 ہزار سے زائد کیس رپورٹ ہوئے جبکہ بھارت میں کرونا وائرس سے اموات کی تعداد ایک لاکھ 54 ہزار تک جاپہنچی ہے۔

دوسری جانب وائٹ ہاؤس کی ترجمان جین پساکی نے چند روز قبل اپنے بیان میں کہا تھا کہ لازمی ہے کہ ہم اس بات کی تہہ تک پہنچیں کہ کرونا وائرس کس طرح ظاہر ہوا اور پوری دنیا میں پھیل گیا، حقائق جاننے کے لیے بائیڈن انتظامیہ تمام وسائل بروئے کار لانے کے لیے پُر عزم ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کرونا کس طرح پھیلا، امریکا کا تہہ تک پہنچنے کا فیصلہ

ترجمان وائٹ ہاؤس کا کہنا تھا کہ وائرس کے پھیلاؤ سے متعلق عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ پر انحصار نہیں کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ جنوبی افریقا میں پائی جانے والی کرونا کی نئی قسم اب امریکا بھی پہنچ گئی ہے، امریکا میں جنوبی افریقی نوعیت کے نئے وائرس کے 2 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، کرونا کی اس نئی اور زیادہ متعدی قسم کی پہلی بار امریکا میں تصدیق ہوئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں