The news is by your side.

Advertisement

والدین نے شیرخوار کے غذائی چارٹ پر عمل کرتے ہوئے بڑی غلطی کر دی

لندن: برطانیہ میں والدین نے شیر خوار بچے کے غذائی چارٹ پر عمل کرتے ہوئے ایسی غلطی کی، جس نے لوگوں کو حیران کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ میں والدین اپنے شیر خوار بچے کو ایسی چیز کھلاتے رہے جس نے لوگوں کو سر پکڑنے پر مجبور کر دیا، انھوں نے 7 ماہ کے بچے کو 6 ماہ تک آئس کیوب (برف کے ٹکڑے) کھلائے۔

معلوم ہوا کہ والدین نے ایسا قصداً نہیں کیا تھا، بلکہ انھوں نے ایک ایسی غلطی کی جس نے لوگوں کو حیران کیا، انھیں یقین نہ آیا کہ کوئی ایسی غلطی بھی کر سکتا ہے۔

یہ معاملہ تب سامنے آیا جب گزشتہ روز ایک برطانوی جوڑے نے ویب سائٹ ’ریڈٹ‘ پر دیگر لوگوں سے سوال کیا کہ ان کا بچہ سبزیاں اور پھل تو شوق سے کھا لیتا ہے لیکن ’آئس کیوب‘ کھانے میں بہت نخرے کرتا ہے۔

دراصل ان والدین کو ایک غذائی چارٹ دیا گیا تھا، والدین کا خیال تھا کہ بچوں کے غذائی چارٹ میں پھلوں اور سبزیوں کے ساتھ آئس کیوب کھلانے کا بھی کہا گیا ہے، برطانوی اخبار دی مرر کے مطابق ویب سائٹ پر دیگر افراد نے اس جوڑے سے غذائی چارٹ کی تصویر شیئر کرنے کا مطالبہ کیا۔

جب انھوں نے غذائی چارٹ شیئر کیا تو لوگوں نے اسے دیکھ کر سر پکڑ لیا، کیوں کہ غذائی چارٹ میں آئس کیوب کی تصاویر بچے کو دی جانے والی غذا کی مقدار کا تعین کرنے کے لیے بطور حوالہ دی گئی تھیں، یعنی آئس کیوب دوا کے سرونگ سائز کے حوالے کے طور پر تھے۔

چارٹ میں واضح لکھا ہوا تھا کہ بچے کو ایک آئس کیوب کے سائز کے حساب سے مٹر کے دانے کھلائیں، دو آئس کیوب کے برابر گاجر کھلائیں۔

تاہم والدین غلط فہمی میں مٹر، ڈیری مصنوعات، انڈوں، اناج اور گاجر کے ساتھ ساتھ بچے کو 6 ماہ تک تین آئس کیوب  روزانہ کھلاتے رہے۔ معلوم ہوا کہ والدین نے غذائی چارٹ کا ہدایت نامہ ایسی حالت میں پڑھا تھا جب انھیں نیند کی ضرورت تھی لیکن وہ نیند سے محروم تھے، اس وجہ سے انھوں نے اسے غلط پڑھ لیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں