بدھ, مئی 22, 2024
اشتہار

خیبرپختونخوا اسمبلی بحال کرنے کے لئے ہائی کورٹ میں درخواست دائر

اشتہار

حیرت انگیز

پشاور : خیبرپختونخوا اسمبلی بحال کرنے کے لئے درخواست دائر کردی گئی، جس میں 18 جنوری 2023 کو اسمبلی تحلیل کے اقدام کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پشاور ہائی کورٹ میں خیبرپختونخوا اسمبلی بحال کرنے کے لئے درخواست دائر کردی گئی، درخواست محمد فرقان نے سیف اللہ محب کاکاخیل کی وساطت سے دائر کی۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ وزیراعلی خیبرپختونخوا نے بغیر کسی وجہ کے پارٹی سربراہ کی ہدایات پر اسمبلی تحلیل کی، تحریک انصاف کے چیئرمین نے بھی بعد میں کہا ہے کہ اسمبلی تحلیل کا مشورہ ان کو کسی اور نے دیا تھا۔

- Advertisement -

درخواست میں کہا گیا کہ 9 مئی کو افسوسناک واقعات ہوئے، الیکٹڈ حکومت ہوتی تو ایسے واقعات رونما نہ ہوتے، ملک میں نئے الیکشن کا دور دور کوئی امکان نہیں ہے۔

دائر درخواست میں کہنا تھا کہ لاہور ہائی کورٹ نے اسپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے پی ٹی آئی اراکین اسمبلی کی استعفوں کو کالعدم قرار دیا ہے، صوبائی اسمبلی تحلیل کو بھی کالعدم قرار دیا جائے۔

درخواست گزار نے کہا کہ قومی اسمبلی کو تحلیل کیا گیا تو سپریم کورٹ نے مداخلت کرکے اسمبلی کو بحال کیا تھا۔

درخواست میں 18 جنوری 2023 کو اسمبلی تحلیل کے اقدام کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ نگران حکومت بھی ناکام ہوچکی ہے, نگران حکومت کے پاس اتنے اختیارات نہیں ہوتے، ملک میں مہنگائی عروج پر ہے عوام شدید مشکلات کا شکار ہے۔

درخواست میں وفاقی اور صوبائی حکومت, الیکشن کمیشن اور سیکرٹری قانون کو فریق بنایا گیا ہے۔

Comments

اہم ترین

مزید خبریں