پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ‘ عدالت میں چیلنج -
The news is by your side.

Advertisement

پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ‘ عدالت میں چیلنج

لاہور: وفاقی حکومت کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات میں حالیہ اضافے کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا گیا‘ درخواسر گزار کا کہنا ہے کہ حکومت پہلے ہی غیر قانونی ٹیکس وصول کررہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق آج بروز بدھ لاہور ہائی کورت میں اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر کردہ درخواست میں پٹرولیم مصنوعات کو غیر قانونی قرا ر دیا گیا ہے۔

عدالت میں دائر کردہ درخواستمیں کہا گیا ہے کہ عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں کمی کے باوجود حکومت کی جانب سے عوام پر پیٹرولیم بم گرا دیا گیا ہے ‘ وفاقی حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی بجائے غیر قانونی طور پر اضافہ کیا ۔

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا گیا*

درخواست گزار کے مطابق حکومت پہلے ہی پیٹرولیم امصنوعات پر غیر قانونی طور پر اضافی سیلز ٹیکس وصول کر رہی ہے اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے اور سیلز ٹیکس بڑھانے سے قبل وفاقی کابینہ سے منظوری بھی حاصل نہیں کی گئی ۔

درخواست گزار نے استدعا کی کہ عدالت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہونے والے حالیہ اضافہ کو کالعدم قرار دے۔

حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافہ کرکے عوام کی مشکلات میں بھی اضافہ کردیا، مہنگائی کی چکی میں پسی ہوئے شہری اب پیٹرول مزید مہنگا خریدنے پر مجبور ہوگئے۔

آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کی جانب سے قیمتوں میں اضافے کا باقاعدہ اعلان کردیا گیا ہے، پیٹرول کی قیمت میں2روپے 49 پیسےفی لیٹراضافہ اور ڈیزل کی قیمت میں5روپے 19 پیسےفی لیٹراضافہ کیا گیا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں