The news is by your side.

Advertisement

فائزر کا اپنی کرونا ویکسین سے متعلق بڑا اعلان

نیویارک: امریکی دوا ساز کمپنی فائزر اور جرمن کمپنی بائیو این ٹیک نے اپنی کووِڈ 19 ویکسین کی بہتر شکل کی طبی آزمائش کا اعلان کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق فائزر اور بائیو این ٹیک کا کہنا ہے کہ وہ کرونا وائرس کی اپنی ویکسین کو مزید بہتر بنا رہے ہیں، اور اس سلسلے میں اس کی طبی آزمائش کی جائے گی۔

مذکورہ کمپنیوں نے جمعرات کو مشترکہ بیان میں کہا کہ ویکسین کو بہتر شکل دینے کا مقصد کرونا وائرس کی متغیر قسم ڈیلٹا کے سنگین انفیکشنز سے بچاؤ ہے، انھوں نے توقع ظاہر کی کہ ویکسین کی بہتر بنائی گئی قسم کی طبی آزمائش اگست میں متوقع ہے۔

دونوں کمپنیوں نے، کووِڈ 19 کی موجودہ ویکسین کے تیسرے ٹیکے کی افادیت سے متعلق اپنی طبی آزمائش کے نتائج بھی جاری کر دیے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ دوسرے ٹیکے کے 6 ماہ بعد تیسرے ٹیکے نے جنوبی افریقا میں دریافت شدہ بیٹا متغیر قسم کے خلاف مدافعت 5 سے 10 گنا بڑھا دی۔

انھوں نے کہا اعداد و شمار سے یہ عندیہ بھی ملتا ہے کہ موجودہ ویکسین کے دوسرے ٹیکے کے 6 ماہ بعد، کرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کی ویکسین کی صلاحیت کم زور پڑ سکتی ہے۔

کمپنیوں کا مؤقف ہے کہ 2 ٹیکوں پر مشتمل ویکسینیشن کا عمل مکمل ہونے سے 6 ماہ سے ایک سال کے عرصے میں بچاؤ کی بلند ترین سطح برقرار رکھنے کے لیے، تیسرے ٹیکے کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔

تاہم امریکی ادارے سی ڈی سی کا کہنا ہے کہ جیسے ہی سائنسی بنیادوں پر یہ چیز سامنے آئی کہ مدافعت کو تقویت دینے کی ضرورت ہے، تو تیسرا ٹیکا لگانے میں کوئی تاخیر نہیں کی جائے گی، فی الوقت وہ امریکی جنھیں دونوں ٹیکے لگ چکے ہیں، فی الحال انھیں مدافعت کو تقویت دینے والے تیسرے ٹیکے کی ضرورت نہیں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں