The news is by your side.

Advertisement

ٹک ٹاک بند کرنے سے متعلق حکم نامہ جاری

پشاور:پشاور ہائیکورٹ کا کہنا ہے کہ ٹک ٹاک کا استعمال نوجوان نسل کیلئے نشے کی طرح ہے، پی ٹی اے کو ہدایات کی ہے سینسرطریقہ کار آنے تک ٹک ٹاک کو بند کیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق پشاور ہائیکورٹ نے ٹک ٹاک کی بندش سے متعلق حکم نامہ جاری کردیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ ٹک ٹاک کا استعمال نوجوان نسل کیلئےنشے کی طرح ہے،ٹک ٹاک پر بہت سی ویڈیوزفحاشی،غیر اخلاقی ،روایات کے برعکس ہیں لیکن ویڈیوز کو جانچنے کے لئے کوئی طریقہ کار موجود نہیں۔

،حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ کچھ غیراسلامی،غیراخلاقی ویڈیوزپرمتعلقہ اداروں کو کہا گیا مگرمثبت نتائج نہیں آئے، ڈی جی پی ٹی اے نے موقف اپنایا ٹک ٹاک آفس سنگاپور میں ہے یہاں نہیں اور ویڈیوز کو سینسر ،فلٹر یا ہٹانا ہمارے بس میں نہیں۔

عدالت نے کہا کہ اس کو سینسرکرنا مشکل ہے تو واحد حل اس پر پابندی یا بند کرنا ہے، ٹک ٹاک پر ایسے مواد بھی آپلوڈ ہوتے ہیں جو دیکھنے کے قابل بھی نہیں، بعض نوجوانوں نے ٹک ٹاک ویڈیوزبناتے وقت خودکشی بھی کی۔

ہائی کورٹ نے حکم نامے میں کہا کچھ اسلامی ممالک میں ٹک ٹاک پر پابندی عائد ہے، پی ٹی اے کو ہدایات کی ہے سینسرطریقہ کار آنے تک ٹک ٹاک کو بند کیا جائے اور پی ٹی اے اس حوالے سے اپنا رپورٹ جمع کرائے۔

یاد رہے پشاور ہائی کورٹ نے ٹک ٹاک ایپلی کیشن بند کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا تھا کہ جب تک ٹک ٹاک کے عہدیدارتعاون نہیں کرتے تب تک ایپلی کیشن بند رکھیں۔

چیف جسٹس قیصر رشید خان نے مزید کہا ٹک ٹاک پرجوویڈیوزاپ لوڈہوتی ہیں وہ ہمارےمعاشرے کوقبول نہیں، ٹک ٹاک ویڈیوز سے معاشرے میں فحاشی پھیل رہی ہے اور زیادہ نوجوان متاثرہورہےہیں، ٹک ٹاک سےمتعلق جورپورٹ مل رہی ہے یہ افسوسناک ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں