The news is by your side.

Advertisement

فزکس کا پرچہ پہنچنے میں تاخیر پر ذمہ داران کیخلاف کارروائی

کراچی : میٹرک کے امتحانی مراکز پر پرچہ تاخیر سے پہنچنے کا نوٹس لے لیا گیا، ثانوی تعلیمی بورڈان غیر حاضر ہونے والے سینٹر کنٹرول آفیسر کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کرے گا۔

ثانوی تعلیمی بورڈ کے تحت پیر کے روز شروع ہونے والے میٹرک کے سالانہ امتحانات 2021 کے دوران سینٹر کنٹرول آفیسر (سی سی او) کی غیرحاضری اور غیر ذمہ داری کی وجہ سے443امتحانی مراکز میں سے کچھ امتحانی مراکز پر فزکس کا پرچہ تاخیر سے امتحانی مراکز پر پہنچا۔

جس کی وجہ سے کچھ امتحانی مراکز پر پرچے تاخیر سے شروع ہوئے جس کی وجہ سے امتحانی مراکز پر مامور عملے اور طلباء وطالبات کو سخت پریشانی کا سامنا ہوا لیکن ناظم امتحانات سید محمد علی شائق نے اپنی پوری ذمہ داری کے ساتھ جن مراکز پر امتحانی پرچے تاخیر سے پہنچے تھے وہاں اضافی وقت دے کر طلباء و طالبات کو سہولت فراہم کی۔

بورڈ کے تمام ذمہ دار افسران نے پورے کراچی میں قائم کئے گئے 11 مرکزی امتحانی حب پروقت سے پہلے ہی امتحانی پرچہ اور سندھ حکومت کی جانب سے مکمل ایس او پیز پر عملدرآمد کیلئے امتحان دینے والے امیدواروں کیلئے بورڈ آفس نے 25 لاکھ حفاظتی ماکس، 513 سینٹی ٹائزراور ایک ہزار تھرمومیٹر وقت پر پہنچا دیئے تھے لیکن کچھ سینٹر کنٹرول آفیسر بورڈ کی جانب سے بنائے گئے مرکزی امتحانی حب پر نہیں پہنچے۔

ثانوی تعلیمی بورڈکے چیئرمین سید شرف علی شاہ نے بورڈ کی جانب سے بنائے گئے مرکزی امتحانی حب کی تعداد 11 سے بڑھا کر 18 کر دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بورڈ کی جانب سے جاری کئے گئے تمام سینٹرز کنٹرول آفیسر کے لیٹر کینسل کر دیئے گئے ہیں لہٰذا تمام سینٹر سپرنٹنڈنٹ یا ان کے مجاز نمائندے کو اتھارٹی لیٹر کے ساتھ بورڈ کی جانب سے مرکزی امتحانی سینٹرپر بھیج کر با آسانی امتحانی پرچہ جات حاصل کر سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں : دسویں جماعت کے پہلے پرچے میں تاخیر : طلبہ اور والدین سراپا احتجاج

انہوں نے کہا کہ ثانوی تعلیمی بورڈ غیر حاضر ہونے والے سینٹر کنٹرول آفیسر کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کرے گی جس کیلئے بورڈ نے ہنگامی طور پر سینئر افسران مسز حور مظہر، خالد احسان اور سید منیر حسن پر مشتمل ایک3 رکنی کمیٹی قائم کر دی ہے جو دو روز کے مختصر وقت میں اپنی رپورٹ چیئرمین میٹرک بورڈ کو پیش کرے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں