کینیڈا میں لاپتہ ہونے والی ایئرہوسٹس پہلے بھی جرائم میں ملوث رہی ہیں -
The news is by your side.

Advertisement

کینیڈا میں لاپتہ ہونے والی ایئرہوسٹس پہلے بھی جرائم میں ملوث رہی ہیں

کراچی: کینیڈا میں مبینہ طور پر لاپتہ ہونے والی پی آئی اے کی میزبان سے جڑے حیرت انگیز حقائق سامنے آگئے ، فریحہ مختار پہلے بھی کئی بے قاعدگیوں میں ملوث رہی ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق پی آئی اے کی ایئرہوسٹس گزشتہ جمعرات سے لاپتہ ہے ، پی آئی اے نے مذکورہ ایئرہوسٹس کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا کہ سات روز کے اندر اگر رابطہ نہیں کیا گیا تو نوکری سے فارغ کردیا جائے گا۔

ترجمان پی آئی اے کے مطابق فضائی میزبان سیدہ فریحہ مختار کو تیرہ ستمبر کو پی آئی اے کی پرواز پی کے 782 کے زریعے لاہور پہنچنا تھا ، فضائی میزبان کے پراسرار لاپتہ ہونے پر پی آئی اے انتظامیہ نے واقعے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے جبکہ کینیڈا کی پولیس کے پاس بھی اطلاع درج کرادی گئی ہے۔

ماضی میں نکالا جانے والا شوکاز نوٹس

اے آروائی نیوز کو موصول ہونے والی تفصیلات کے مطابق فریحہ مختار ماضی میں مختلف مجرمانہ سرگرمیوں ملوث رہی ہیں ، انہیں سنہ 2011 میں پی آئی اے میں بطور ایئر ہوسٹس تعینات کیا گیا تھا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ انہوں نے پی آئی اے میں بی کام کی جعلی ڈگری جمع کراکر نوکری حاصل کی ، سنہ 2014 میں انہیں جعلی ڈگری کے سبب انہیں شو کاز نوٹس بھی جاری کیا تھا ۔

جون7، 2015 لندن سے کراچی آنے والی پرواز پی کے 788 میں اسمگلنگ کے الزام میں پکڑی گئی تھیں ، برطانوی بارڈر سیکیورٹی فورس نے ہیتھرو ائیر پورٹ پر غیر قانونی ،غیر ملکی کرنسی اور موبائل فون برآمد کیے تھے ۔

اس موقع پر ایئر ہوسٹس کو لندن میں حراست میں لے کر تفتیش بھی کی گئی تھی جبکہ سنہ 2015 میں انہیں نوکری سے برخواست بھی کیا گیا تھا۔

پی آئی اے کے ترجمان کا کہنا ہے کہ فضائی میزبان فریحہ مختار کے خلاف ضابطے کی کارروائی عمل میں لائی جارہی ہے اور کینیڈا کی پولیس بھی گمشدگی کی اطلا ع دی جاچکی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں