The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کی پریمیئرسروس ادارے کیلئے وبالِ جان بن گئی

کراچی : باکمال لوگوں کی لاجواب پریمیئر سروس نے قومی ایئرلائن کی بحالی کے بجائے اسے مزید بدحال کردیا، پریمیئرسروس کی وجہ سے ادارے کو ابتدائی تین ماہ میں ڈیڑھ ارب روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑا۔

تفصیلات کے مطابق باکمال لوگوں کی لاجواب سروس کی پریمیئر سروس سے پی آئی اے کی بہتری تو کیا ہوتی، الٹا لینے کے دینے پڑ گئے۔

چودہ اگست 2016 سے تیس نومبر2016 کے مالیاتی نتائج کے مطابق پریمئر سروس سے ہونے لاوا کل نقصان ایک ارب چھپن کروڑ اڑتیس لاکھ روپے ہے۔ بہترفیصد سیٹ فیکٹر کے ساتھ پریمیئر سروس کا کل منافع ایک ارب تیس کروڑ رہا۔

اس پریمیئر سروس کا افتتاح گزشتہ سال 14 اگست کو پی آئی اے نے وزیراعظم پاکستان نواز شریف سے بہت دھوم دھام سے کرایا تھا، پی آئی اے پریمیئر سروس سے ابتدائی ساڑھے تین ماہ کے دوران ادارے کو چارسو ملین روپے سے زائد کا نقصان ہوا جبکہ تین ماہ میں طیارے کے کرائے کی مد میں 72 لاکھ ڈالر قومی فضائی کمپنی نے سری لنکن ایئر کو ادا کئے۔

مزید پڑھیں : خسارے کے باعث پی آئی اے کا پریمیئر سروس بند کرنے پرغور

اس سروس کے حوالے سے پی آئی اے نے دعویٰ کیا تھا کہ یہ سروس قومی ایئرلائن کے لیے نہایت منافع بخش ثابت ہوگی۔ اس سروس کے تحت اسلام آباد اور لاہور سے چھ ہفتہ وار پروازیں لندن کے لیے چلتی ہیں، مسافروں کو لندن پہنچنے پرلیموزین سروس مہیا کی جاتی ہے جس کی مد میں دس کروڑ روپے سے زائد کے اخراجات ہوئے۔

مزید پڑھیں : پی آئی اے پریمئر سروسز‘ چارسو ملین کا خسارہ

ذرائع کے مطابق پی آئی اے انتظامیہ نے اس سروس کے لیے طیارے ویٹ لیز پرحاصل کیے تھے جس کی مد میں ایک ارب انتیس کروڑ روپے اداکیے گئے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں