The news is by your side.

Advertisement

طیارہ حادثہ، ڈی این اے اجزاء کے نتائج 21 دن میں آجائیں گے، وزیر صحت سندھ

کراچی : صوبائی وزیرصحت ڈاکٹر عذرا پیچوہونے کہا کہ ناقابل شناخت لاشوں کے ڈی این اے کراچی یونیورسٹی لیب بھجوا دیے گئے ہیں،اب تک 47 لواحقین نے ڈی این اے سیمپل جمع کروا دیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی وزراء ناصرحسین شاہ، ڈاکٹر عذرا پیچوہو اور مرتضی وہاب نے طیارہ حادثے سے متعلق پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طیارہ حادثے کے بعد 97 لاشیں برآمد ہوئیں جو سب مسافر تھے، مرنے والوں میں 68 مرد، 26 عورتیں اور 3 بچے شامل تھے، ڈی این اے اجزاء کے نتائج 21 دن میں آجائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ 19 لاشوں کی شناخت کرلی گئی ہے، 6 زخمی زیرعلاج ہیں، 6 زخمیوں میں سے 2 بچ جانے والے مسافر جبکہ 4 رہائشی ہیں۔

وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو نے کہا کہ ڈی این اے اجزاء کے نتائج 21 دن میں آجائیں گے،جہاز حادثے میں 97 افراد جاں بحق ہوئے دو افراد زندہ بچ گئے۔

وزیر صحت سندھ کا کہنا تھا کہ ڈی این اے پر گورنر صاحب کی لاعلمی ہے، ہم نے اعلی معیار کی لیباٹری تیار کی ہے، تمام ڈی این اے جامعہ کراچی کی لیب میں ہوں گے۔

انہوں نے کہاکہ میتیوں میں 26 خواتین،68مرد،3 بچے شامل ہیں،واقعہ کے بعد 66 میتیں جناح اور 31 سول اسپتال پہنچائیں گئیں،ایک زخمی سول اور دوسرا دارالصحت اسپتال میں زیر اعلاج ہےاوراب تک 19 میتیں شناخت کے بعد ورثائ کے حوالے کی جاچکی ہیں،اب تک 97 میتوں کے ڈی این اے لیے جاچکے ہیں ،66 افراد کے جناح اور 31 کے سول اسپتال میں ڈی این اے لیے گیے۔

مرتضی وہاب کا کہنا تھا کہ حادثہ کی اخلاقی اور قانونی ذمہ داری پی آئی اے کی بنتی ہے، نقصانات کا ازالہ بھی پی آئی اے کو کرنا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ 19 مکانات گرنے والے جہاز کی زد میں آئے، دس گاڑیاں اور تین موٹرسائیکلیں بھی متاثر ہویئں، حادثہ میں صرف مسافر جاں بحق ہوئے چھ علاقہ مکین زخمی ہیں اور سولہ رہائشوں کو مقامی ہوٹل میں منتقل کیا گیا ہے۔

صوبائی وزیر ناصر شاہ نے کہا کہ ایس او پیز پر عمل کرتے ہوئے نماز عید ادا کی جاسکتی ہے، ایئر پورٹ کے اطراف میں گراونڈ پلس ون کی تعمیرات کی اجازت ہے، ائیرپورٹ کے اطراف ہائی رائز بلڈنگ بنانے کی اجازت سول ایوی ایشن سے لینا ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ لاہور سے ایک ٹیم کراچی آئی ہے لیکن ایسا نہیں ہم ٹیسٹ نہیں کرسکتے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں