The news is by your side.

Advertisement

طیارہ حادثہ، کاک پٹ وائس ریکارڈر کو ڈی کوڈ کرنے کا عمل شروع

کراچی: پی آئی اے طیارہ حادثے کی تحقیقات کا سلسلہ جاری ہے، ایئر بس ماہرین نے فلائٹ ریکارڈر، کاک پٹ وائس ریکارڈر کو ڈی کوڈ کرنا شروع کردیا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی ٹیم کے ہمراہ ایئر بس ہیڈ کوارٹر میں پہلا کو آرڈینیشن اجلاس ہوا جس میں ایئربس ماہرین نے بتایا کہ جدید لیب میں بلیک باکس پر تربیت یافتہ ماہرین نے کام شروع کردیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بلیک باکس کے دونوں حصوں کو پاکستانی ٹیم کی موجودگی میں ڈی کوڈ کیا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان کی تحقیقاتی ایئرکرافٹس انویسٹی گیشن ٹیم ایئربس ماہرین کے ہمراہ فرانس پہنچی تھی، کاک پٹ وائس ریکارڈر کے ڈی کوڈ ہونے سے طیارہ حادثے کے اہم شواہد سامنے آئیں گے۔

مزید پڑھیں: طیارہ حادثہ، تحقیقاتی ٹیموں نے اہم معلومات حاصل کر لیں

دوسری جانب تحقیقاتی ٹیم نے لاہور ائرپورٹ پر بھی شواہد اکھٹا کرنا شروع کردیے، تحقیقاتی ٹیم نے پی آئی اے کی بدقسمت پرواز پی کے8303لاہور سے اڑان بھرنے سے لےکر طیارے حادثے کے مقام تک تمام شواہد طلب کرلیے۔

لاہور پر موجود ائر ٹریفک کنٹرولر اور کپتان کے درمیان ہونے والی گفتگو کا ریکارڈ بھی حاصل کرلیا گیا ہے جب کہ تحقیقاتی ٹیم نے کراچی میں سول ایوی ایشن اتھارٹی کے چیف آپریشن آفیسر سے ایئر ٹریفک کنٹرولر کا ڈیوٹی روسٹر بھی طلب کرلیا ہے۔

یاد رہے کہ 22 مئی جمعۃ الوداع کو لاہور سے کراچی آنے والا پی آئی اے کا طیارہ ایئرپورٹ کے قریب واقع ماڈل کالونی جناح گارڈن کی رہائشی آبادی پر گر کر تباہ ہوگیا تھا جس کے نتیجے میں 97 مسافر ہلاک جبکہ 2 مسافر معجزانہ طور پر بچ گئے تھے۔ حادثے میں مقامی لوگوں کی ہلاکتیں بھی ہوئیں جبکہ پانچ گھر مکمل تباہ ہوگئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں