The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن اور نوازشریف ترقی کا دوسرا نام ہے، وزیراعظم

خاران: وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ ن اور نوازشریف ترقی کا دوسرا نام ہے،فیصلہ عوام نے کرنا ہے، ن لیگ کی سیاست یا گالی کی سیاست چاہیے،مخالفین کی بدقسمتی ہے، ان کی گالیاں ختم ہوگئی لیکن پذیرائی نہ ملی، جولائی میں گالیوں کی سیاست بھی دم توڑجائےگی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم شاہدخاقان عباسی نے تقریب سےخطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت ہے اور رہے گی، کسی بھی صوبے،شہرمیں جائیں اوراسکیمزدیکھیں، ملک بھرمیں تمام اسکیمزپرنوازشریف یان لیگ کی تختی لگی ہوگی، کیایہ مسائل پہلے نہیں تھے،ن لیگ نےمسائل کوحل کیا، حکومت سےسب سےپہلےنامکمل اسکیمزکومکمل کیا۔

وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن اور نوازشریف ترقی کادوسرانام ہے، آج بلوچستان سمیت ملک بھرمیں سڑکوں کا جال بچھاہوا ہے، خاران کےعوام نےعبدالقادربلوچ کومنتخب کرکےاسمبلی میں بھیجا، ، ملک بھرمیں سڑکوں کاجال ایک دوسرے کو مزید قریب لایاہے۔

شاہدخاقان عباسی نے کہا کہ مسلم لیگ ن ترقی کیلئےکام کرنے والی جماعت ہے، خاران سڑک منصوبہ اس علاقے کیلئےاہم منصوبہ ہے، منصوبے سے ایران جانے والے افراد کو سہولت ملے گی، اہم منصوبوں پرکام کیا اور مزید کام کررہےہیں، بہت سے اسکیمز حکومت خود اپنے وسائل سے بنارہی ہے، پرانے منصوبے مکمل ہوچکے نئے منصوبے بن رہےہیں، ترقی جھوٹےوعدوں سے یا باتوں سےنہیں ہوتی، ترقی کیلئےعملی اقدامات کرناہوتے ہیں اوروہ ہم نے کیے۔

ان کا کہنا تھا کہ نوجوان یاد رکھیں بلوچستان مستقبل میں امیرترین صوبہ ہوگا، بلوچستان کوامیرصوبہ بنانےکیلئے آئندہ حکومت کا انتخاب دیکھنا ہوگا، بلوچستان میں امن کی ضرورت تھی اورہم نے اس پرکام بھی کیا، ہم نے سیاسی طور پر سب کو متحد کیا،فوج نے بھرپور مقابلہ کیا، آج ملک بھر میں امن ہے، لوگ پرامن زندگی گزار رہےہیں۔

وزیر اعظم نے نوکنڈی سے ماشکیل اورخاران سے پشین تک سڑکوں کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ترقی کاسفر جاری ہے اور اس امن کو ہم نے برقراررکھنا ہے، مخلص قیادت کواسمبلی میں بھیجیں گےتوترقی کاسفرجاری رہےگا، بلوچستان کے ہر ضلع میں ایک ایل پی جی ایئرمکس کی اسکیم بنائی جائےگی۔

انھوں نے کہا کہ بجلی ایک بنیادی حق ہے،بلوچستان کی گیس ملک بھرنےاستعمال کی،قدرتی وسائل سےفائدہ اٹھانے کیلئے انفرااسٹرکچر کی ضرورت ہے، سروے جاری ہے جلدبہترین اسپتال بھی قائم کیےجائیں گے۔

شاہدخاقان عباسی کا کہنا تھا کہ آج سیاست میں عوام سےکوئی چیزڈھکی چھپی نہیں ہے، عوام جانتےہیں آج کل سیاست کا کیا معیارہے، ایک طرف مسلم لیگ ن کی سیاست اوردوسری طرف گالی کی ہے، فیصلہ عوام نے کرنا ہے،ن لیگ کی سیاست یاگالی کی سیاست چاہیے، مخالفین کی بدقسمتی ہے.ان کی گالیاں ختم ہوگئی لیکن پذیرائی نہ ملی، مخالفین گالی کی سیاست چھوڑیں اورعملی سیاست کریں۔

سینیٹ اںتخابات کے حوالے سے انھوں نے کہا کہ سینیٹ انتخابات سےمتعلق ہم نےکچھ نہیں کہا، ایک جماعت کےسربراہ نےکہا میرےلوگ خریدے گئے ، چیئرمین سینیٹ کا انتخاب آیا تو بیچنے اور خریدنے والاساتھ کھڑےتھے، عوام خودفیصلہ کریں گے میں نے کوئی غلط بات تو نہیں کی، ان لوگوں کوحکومت مل گئی تو یہ کیاترقی کریں گے، آج بھی لڑائی ہورہی ہےکس کےارکان بکے اور کس نےخریدے۔

ان کا کہنا تھا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بارٹیکس نصف کردیاگیاہے، جولائی میں عوام اپنی تقدیرکافیصلہ کریں گے، جولائی میں گالیوں کی سیاست بھی دم توڑجائےگی، ملک میں ٹیکس اصلاحات لےکرآئےہیں، وسائل کیلئےٹیکس اصلاحات لائی جارہی ہیں، چیلنج کرتاہوں عوام کو آکر بتائیں ٹیکس اصلاحات سے کتنافائدہ ہوگا، تنقیدضرورکریں لیکن عوام کوبتائیں انہوں نےکتناٹیکس اداکیا۔

افغانستان کے دورے سے متعلق وزیراعظم نے کہا کہ افغان لیڈرشپ سےدورےمیں کھل کربات ہوئی، افغانستان میں امن پاکستان کے لیے بھی ضروری ہے، افغانستان میں جنگ مسائل کاحل نہیں، افغانستان میں مسائل کاحل مل بیٹھ کرہی نکالاجاسکتاہے، ہم چاہتےہیں افغانستان میں امن قائم ہو،طویل جنگ سےنقصان ہوا، افغانستان میں بھی امن ہوگااوراس کےثمرات ہمیں ملیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں