The news is by your side.

Advertisement

حکومت نے وزیر اعظم ہاؤس کو یونیورسٹی بنانے کا وعدہ پورا کردیا

اسلام آباد: حکومت نے وزیر اعظم ہاؤس کو یونیورسٹی بنانے کا وعدہ پورا کردیا، اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ہاؤس جیسے بڑے گھرغلامی کے دورکی نشانیاں ہیں جنہیں ختم کرنا چاہتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے اپنا ایک اور وعدہ پورا کرتے ہوئے وزیر اعظم ہاؤس کو یونیورسٹی بنانے کے انتظامات مکمل کرلیے۔ یونیورسٹی کو اسلام آباد نیشنل یونیورسٹی کا نام دیا جائے گا۔ یونیورسٹی کی لانچنگ کانفرنس ’ایمرجنگ چیلنجز فار پاکستان‘ سے وزیر اعظم عمران خان نے خطاب کیا۔

اپنے خطاب میں وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بچپن سے ہی گورنر ہاؤسز اور حکمرانوں کے بڑے گھر دیکھے، برطانیہ میں حکمرانوں کی رہائش دیکھ کر میرے ذہن میں تبدیلی آئی۔ 10 ڈاؤننگ اسٹریٹ میں سادہ سی عمارت میں برطانوی وزیراعظم کا گھر تھا۔

انہوں نے کہا کہ جب آزادی ملی تو تعلیم کے شعبے پر کسی نے توجہ نہیں دی، وزیر اعظم ہاؤس جیسے بڑے گھر غلامی کے دور کی نشانیاں ہیں جنہیں ختم کرنا چاہتے ہیں۔ نوجوان طبقہ ٹیکس کے پیسے کے غلط استعمال پر آواز اٹھائے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ عوام کو باشعور بنا رہے ہیں، مدینہ کی ریاست میں حکمرانوں نے پیسہ اپنی ذات پر خرچ نہیں کیا۔ ہمارے حکمران عالیشان محل میں رہتے ہیں۔ وزیر اعظم ہاؤس کو یونیورسٹی کا درجہ دینے کا مقصد حکمران اور عوام میں فاصلہ کم کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جس بڑے ڈاکو سے پیسہ پکڑیں گے وہ تعلیم پر خرچ کیا جائے گا، ملک کی معاشی صورتحال جلد بہتر ہوجائے گی۔

خیال رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے برسر اقتدار  آنے کے بعد وزیر اعظم ہاؤس، وزیر اعلیٰ اور گورنر ہاؤسز کو عوامی استعمال میں لانے کا اعلان کیا تھا۔

انہوں نے خود ملٹری سیکریٹری کے گھر میں رہنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ وزیر اعظم ہاؤس کو یونیورسٹی میں تبدیل کردیا جائے گا۔

بعد ازاں چاروں صوبوں کے گورنر ہاؤسز کو بھی عوام کے لیے کھول دیا گیا تھا۔

وزیر اعظم نے کہا تھا کہ پاکستان کو اس وقت بڑے معاشی بحران کا سامنا ہے، ہمارا قرضہ 30 کھرب روپے سے زائد ہو چکا ہے، لہٰذا حکومت سادگی اختیار کرے۔

انہوں نے وزیر اعظم ہاؤس میں موجود اور دیگر حکومتی عہدیداران کے زیر استعمال لگژری گاڑیاں بھی نیلام کرنے کا اعلان کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں