The news is by your side.

Advertisement

آسیہ کیس کا فیصلہ آئین کے مطابق ہوا، پاکستان کا دستور قرآن و سنت کے تابع ہے، عمران خان

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ  آسیہ بی بی کیس کا فیصلہ سپریم کورٹ کے ججز نے آئین کے مطابق کیا، پاکستان کا دستور قرآن و سنت کے تابع ہے۔

قوم سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پر ایک  طبقے کی جانب سے ردعمل آیا، مدینے کے بعد پاکستان ہی اسلام کے نام پر بننے والا واحد ملک ہے، ہمارا آئین قرآن و سنت کے تابع ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ کسی کی باتوں میں نہ آئیں اور ایسے عناصر سے بھی اپیل کرتا ہوں کہ ریاست سے نہ ٹکرائیں، حکومت کوئی توڑ پھوڑ یا ٹریفک نہیں رکنے دے گی۔

عوام اسلام کے نام پر شرپسندی پھیلانے والوں کو مسترد کردیں

عمران خان

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ’ریاست عوام کے جانوں مال کی حفاظت یقینی بنائے گی لہذا حکومت کو کسی قسم کی کارروائی کے لیے مجبور نہ کیا جائے‘۔

مزید پڑھیں: آسیہ بی بی کی رہائی ، مکمل عدالتی فیصلہ

اُن کا کہنا تھا کہ ’ہم نےگستاخانہ خاکوں پر ہالینڈ کے سفیر اور وزیرخارجہ سے بات کی اور گستاخانہ خاکوں کا سلسلہ فوری طور پر رکوایا، ہمارے وزیرخارجہ نے اقوام متحدہ میں بھی پہلی بار اس معاملے کو اٹھایا‘۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم صرف باتیں نہیں کرتے بلکہ عملی طورپر بھی کام کر کے دکھایا، ہم اپنے نبیﷺ کی شان میں کسی قسم کی گستاخی نہیں دیکھ سکتے۔

یہ بھی پڑھیں: سندھ میں آئندہ 10 روز کے لیے ڈبل سواری پر پابندی عائد

اُن کا کہنا تھا کہ ’میں اور میری کابینہ نے ایک دن چھٹی نہیں کی، مشکل وقت ضرور ہے مگر پاکستان مدینے کے اصولوں پر چل کر ہی عظیم ملک بنے گا، ہم نے ملک کو فلاحی ریاست نہیں بنایا تو پھر کوئی مستقبل نہیں ہوگا‘۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ’ہم نے اس حکومت میں وہ کام کیا جو عملی طورپر کسی نے نہیں کیا، حکومت مسلسل اپنے ملک اور غریب عوام کو مسائل سے نکالنے کی کوششوں میں مصروف ہے‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں